سابق افغان گورنر فضل اللہ واحدی اسلام آباد سے لاپتہ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فضل اللہ واحدی افغان سیاست کی ایک بااثر اور اہم شخصیت ہیں

افغانستان کے صوبوں کنڑ اور ہرات کے سابق گورنر فضل اللہ واحدی پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد سے لاپتہ ہوگئے ہیں۔

ان کے لاپتہ ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے اسلام آباد پولیس کے ترجمان نے بتایا کہ ہرات کے سابق گورنر فضل اللہ واحدی اسلام آباد کے سیکٹر ایف 7 میں رانا مارکیٹ کے قریب چہل قدمی کر رہے تھے جس کے بعد سے وہ لاپتہ ہیں۔

بی بی سی کی پشتو سروس کے داؤد اعظمی کے مطابق فضل اللہ واحدی کے خاندان کا کہنا ہے چہل قدمی کے دوران نامعلوم افراد دو گاڑیوں میں آئے اور انھیں اپنے ساتھ لے گئے۔

ان خاندان کے مطابق وہ اسلام آباد میں چند دیگر رشتے داروں کے ہمراہ برطانوی ویزے کے حصول کے لیے آئے تھے۔

اسلام آباد میں افغان سفارتخانے فضل اللہ واحدی کی گمشدگی کی تصدیق کی ہے اور اس کا کہنا ہے کہ وہ پاکستانی پولیس کے ساتھ رابطے میں ہیں۔

بی بی سی کے نامہ نگار شہزاد ملک کے مطابق پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ سابق افغان گورنر کی تلاش جار ہی ہے اور اس سلسلے میں راولپنڈی اور اسلام آباد میں ناکہ بندی کر دی گئی ہے۔

فضل اللہ واحدی کے رشتہ داروں کا کہنا ہے کہ ان کی کسی کے ساتھ کوئی ذاتی دشمنی نہیں ہے۔

پولیس اہلکاروں کے ساتھ ساتھ پاکستان کے خفیہ ادارے بھی فضل اللہ احدی کو تلاش کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

افغانستان کے سیاسی منظر نامی میں فضل اللہ واحدی کو ایک بااثر اور اہم شخصیت تصور کیا جاتا ہے۔

تاحال کسی فرد یا تنظیم نے ان کے اغوا کی ذمہ داری قبول نہیں کی۔

خیال رہے کہ نومبر 2013 میں اسلام آباد کے مضافات میں ہی حقانی نیٹ ورک کے ایک اہم رہنما نصیرالدین حقانی کو بھی گولی مار کر ہلاک کردیا گیا تھا۔

اسی بارے میں