ویلنٹائن ڈے اسلامی ثقافت کے خلاف ہے: ممنون حسین

Image caption ملک کے دیگر حصوں میں بھی ویلنٹائن ڈے کے خلاف انتظامیہ کی جانب سے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں

پاکستان کے صدر ممنون حسین نے ویلنٹائن ڈے کو اسلام اور پاکستانی ثقافت کے خلاف قرار دیتے ہوئے اسے نہ منانے کی اپیل کی ہے.

ملک کے دارالحکومت اسلام آباد میں طلبا سے خطاب کرتے ہوئے صدرِ پاکستان کا کہنا تھا کہ ویلنٹائن ڈے مغرب کی ثقافت کا حصہ ہے اسلام اور پاکستانی ثقافت میں اسے منانے کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔

اس سے پہلے اسلام آباد انتظامیہ کی جانب سے ویلنٹائن ڈے منانے پر پابندی لگائے جانے کی اطلاعات سامنے آئی تھیں۔

ملک کے دیگر حصوں میں بھی ویلنٹائن ڈے کے خلاف انتظامیہ کی جانب سے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔

خیبر پختونخوا کے ضلع کوہاٹ میں مقامی انتظامیہ نے ویلٹائن ڈے کے کارڈز اور اس دن سے منسوب تمام اشیاء کی فروخت پر پابندی لگا دی ہے۔

ضلعی ناظم کوہاٹ مولانا نیاز محمد نے بی بی سی کو بتایا کہ ویلنٹائن ڈے کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے اور یہ غیر شرعی ہے اس لیے اس پر پابندی عائد کی گئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پشاور کی مقامی حکومت نے ویلنٹائن ڈے کے خلاف ایک قرار داد منظور کی ہے

ان کا کہنا تھا کہ اس موقعے پر لوگوں کو پھول اور کارڈ دینا مناسب نہیں ہے۔

پشاور کی مقامی حکومت نے ویلنٹائن ڈے کے خلاف ایک قرار داد منظور کی ہے جس میں اس کو ’فضول دن‘ قرار دے کر اس پر پابندی لگانے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

یہ قرارداد متفقہ طور پر منظور کی گئی اور ایسی اطلاعات ہیں کہ انتظامیہ سے کہا گیا ہے کہ اس قرار داد پر عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔

جبکہ ضلعی انتظامیہ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ اس پر عمل درآمد ہوتا نظر نہیں آ رہا کیونکہ ویلنٹائن ڈے پر پابندی لگانے کا کوئی قانون موجود نہیں ہے۔

اسی بارے میں