’ایف 16 طیاروں پر بھارت کے ردعمل سے مایوسی ہوئی‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ امریکہ یہ واضح کر چکا ہے کہ ان طیاروں کی فروخت صحیح طور پر نشانہ بنانے کی صلاحیت میں اضافے کے لیے ہیں

پاکستان کا کہنا ہے کہ اسے امریکہ سے ایف 16 طیاروں کی خریداری کے حوالے سے بھارتی حکومت کے ردعمل پر حیرانی اور مایوسی ہوئی ہے۔

اتوار کو دفتر خارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ ’ہمیں بھارتی حکومت کی ردعمل پر حیرانی اور مایوسی ہوئی ہے۔ ان کی فوج اور ہتھیاروں کے ذخائر کہیں زیادہ ہیں اور وہ دفاعی سامان کے سب سے بڑے درآمد کنندہ ہیں۔‘

ایف سولہ طیاروں کی خریداری کے حوالے سے ترجمان کا کہنا تھا کہ پاکستان اور امریکہ انسداد دہشت گردی کے لیے قریبی طور پر تعاون کر رہے ہیں۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ امریکہ یہ واضح کر چکا ہے کہ ان طیاروں کی فروخت صحیح طور پر نشانہ بنانے کی صلاحیت میں اضافے کے لیے ہیں۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز بھارت نے پاکستان کو ایف 16 جنگی طیارے فروخت کرنے کے امریکہ کے فیصلے پر شدید ناراضی کا اظہار کیا تھا۔

بھارتی وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سوروپ نے ٹویٹ کیا: ’ہم پاکستان کو ایف 16 طیارے فروخت کیے جانے کے سلسلے میں اوباما انتظامیہ کی جانب سے نوٹیفکیشن جاری کیے جانے سے مایوس ہوئے ہیں۔‘

انھوں نے کہا ’بھارت امریکہ کے اس خیال سے اتفاق نہیں رکھتا ہے کہ ان طیاروں کی فروخت سے انتہا پسندی کے خلاف جنگ میں مدد ملے گی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بھارت نے پاکستان کو ایف 16 جنگی طیارے فروخت کرنے کے امریکہ کے فیصلے پر شدید ناراضی کا اظہار کیا تھا

خبر رساں ادارے اے ایف پی اور پی ٹی آئی کے مطابق بھارت نے دہلی میں تعینات امریکی سفیر کو بلا کر پاکستان کو ایف 16 جنگی طیارے فروخت کرنے کے امریکی فیصلے کے خلاف اپنی ناراضی ظاہر کی تھی۔

بھارت کی وزراتِ خارجہ نے نئی دہلی میں تعینات امریکی سفیر طلب کر کے ان سے اس فیصلے کے خلاف احتجاج کیا۔

واضح رہے کہ واشنگٹن نے اسلام آباد کو آٹھ ایف 16 طیارے فروخت کرنے پر رضامندی ظاہر کی ہے۔ یہ طیارے جوہری ہتھیار لے جانے کے اہل ہیں۔

امریکہ کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان کو درپیش سکیورٹی خطرات سے نمٹنے کے لیے اس کی مدد کرنا چاہتا ہے۔

یہ جنگی طیارے لوکہیڈ مارٹن کور نے تیار کیے ہیں اور ان میں ریڈار سمیت دوسرے سازوسامان بھی شامل ہیں۔

پینٹاگان کی دفا‏عی سکیورٹی تعاون ایجنسی جو اسلحے کی فروخت کا نگراں ارادہ ہے نے امریکی قانون سازوں کو مجوزہ فروخت کے بارے میں اپنی رضامندی دے دی ہے۔

ادارے نے کہا کہ ایف 16 طیارے سے پاکستانی فضائیہ کو ہر طرح کے موسم، ماحول اور رات میں بھی پرواز کرنے کی سہولت میسر ہوگی جبکہ اس سے پاکستان کی اپنی دفاعی صلاحیت میں بھی اضافہ ہوگا۔

اس سے پاکستان میں دہشت گردی کے خلاف آپریشن میں تقویت ملے گي۔

اسی بارے میں