سازشیں ماضی میں بھی ناکام ہوئیں ہیں: الطاف

تصویر کے کاپی رائٹ MQM
Image caption الطاف حسین گزشتہ بیس سال سے زیادہ عرصے سے لندن میں خود ساختہ جلا وطنی کی زندگی گزار رہے ہیں

متحدہ قومی موومنٹ کے سربراہ الطاف حسین نے کہا ہے کہ ایم کیوایم کو ختم کرنے کی سازشیں ماضی میں بھی ناکام ہوئیں ہیں اور آئندہ بھی ناکامی سے دوچار ہوں گی۔

انھوں نے یہ بات گزشتہ شب ایم کیوایم کے مرکز نائن زیرو پر اظہار یکجہتی کے لیے جمع ہونے والے کارکنوں سے فون پرخطاب کرتے ہوئے کہی۔

الطاف حسین کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم کو ریاستی طاقت کے ذریعے کچلنے کے لیے مختلف الزامات کو جواز بنا کر بار بار اس کے خلاف ریاستی آپریشن کیے گئے اور آج بھی اس کو ختم کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

الطاف حسین کا کہنا تھا کہ نائن زیرو پر بار بار چھاپے مارے گئے اور باہر سے اسلحہ لا کر یہ دعویٰ کیاگیا کہ یہ اسلحہ نائن زیرو سے برآمد کیا گیا ہے، اس الزام کا ڈھول آج بھی پیٹا جاتا ہے۔

’12 مئی کے واقعہ کا ذکر بار بار کیا جاتا ہے حالانکہ اس میں ایم کیو ایم کے 14 کارکنان ہلاک ہوئے تھے لیکن علی گڑھ، پکا قلعہ حیدرآباد، 30 ستمبر 1988ء کو حیدرآباد میں ہونے والے مہاجروں کے قتل عام اور کراچی میں قصبہ کالونی، گرین ٹاؤن، جلال آباد، خواجہ اجمیر نگری، ماڈل کالونی اور دیگر مہاجر بستیوں پر ہونے والے حملوں اور قتل عام کا ذکر نہیں کیا جاتا۔‘

دوسری جانب ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی کے کنوینر ندیم نصرت نے کہا ہے کہ تمام تر سازشوں میں ناکامی کے بعد اب ملک دشمنی اور غداری کے الزامات لگا کر ایم کیوایم کو ختم کرنے کی سازش کی جا رہی ہے لیکن وہ کسی بھی ظلم کے سامنے سر نہیں جھکائیں گے اور اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔

حیدرآباد میں جنرل ورکرز اجلاس سے فون پر خطاب کرتے ہوئے ندیم نصرت نے کہا کہ حقیقت بیان کرنے پر الطاف حسین کی تحریر، تقریر اور تصویر کی نشر و اشاعت پر پابندی لگا دی گئی اور یہ انصاف کا دہرا معیار ہے کہ ایم کیو ایم مخالفین کو تو گھنٹوں ٹی وی پر موقع دیا جاتا ہے لیکن الطاف حسین کو اپنا دفاع کرنے کے لیے پندرہ منٹ کا وقت بھی نہیں دیا جاتا۔

ندیم نصرت کا کہنا تھا کہ اگر کارکن الطاف حسین کے خطاب کے انتظامات کریں اور دورانِ خطاب تالیاں بھی بجائیں تو’سہولت کار‘ بنا کر اُن کو پابندِ سلاسل کر دیا جاتا ہے۔

آج الطاف حسین کے وفاداروں کے لیے چھاپے مارے جاتے ہیں لیکن کارکنان اور حق پرست عوام دھونس، دھاندلی، جبر اور ظلم و ستم سے گھبرانے والے نہیں ہیں اور ہمیشہ ثابت قدم رہیں گے۔

دوسری جانب متحدہ قومی موومنٹ کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایک بار پھر 1992ء والا ڈرامہ دہرایا جارہا ہے، الطاف حسین کو راستے سے ہٹانے کی بھرپورکوشش کی جارہی ہے، ان کی ذات پر حملے کئے جارہے ہیں تاکہ اس تحریک کوہمیشہ ہمیشہ کے لئے ختم کردیاجائے۔

ترجمان نے کہاکہ ایم کیوایم را سے تعلق کے بیہودہ الزام کوسراسرجھوٹ اور بے بنیاد قراردیتی ہے، اسے ایک بار پھرمسترد کرتی ہے ، الزامات لگانے والوں کے پاس اگرثبوت ہیں تو ان الزامات کوعدالتوں میں ثابت کریں۔

اسی بارے میں