ویزا نہ ملنے پر ’مایوسی کا اظہار کیا احتجاج نہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ THINKSTOCK
Image caption پاکستان کولکتہ کے ایڈن گارڈنز سٹیڈیم میں 19 مارچ کو ورلڈ ٹی20 کے میزبان بھارت کے مدِمقابل ہو گا

پاکستانی وزارتِ خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ سفیروں کو پاک انڈیا میچ دیکھنے کے لیے کولکتہ کا ویزا نہ ملنے پر انڈین حکام سے ملاقات میں مایوسی کا اظہار کیا گیا ہے تاہم احتجاج نہیں کیا گیا۔

بدھ کو بی بی سی سے گفتگو میں دفتر خارجہ کے ترجمان نے ان خبروں کی تردید کی کہ جنوبی ایشیا کے لیے پاکستان کے قائم مقام ڈائریکٹر جنرل نے انڈیا میں موجود سفیروں کو پاک بھارت میچ دیکھنے کے لیے کولکتہ کا ویزا نہ ملنے پر بھارت کے ڈپٹی ہائی کمشنر جی پی سنگھ سے ملاقات میں شدید احتجاج کیا گیا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ ’ملاقات میں مایوسی کا اظہار کیا گیا لیکن احتجاج نہیں کیا گیا اور نہ ہی کوئی پریس ریلیز جاری کی جا رہی ہے۔‘

بھارتی روزنامے دی ہندو کے مطابق انڈیا نے گذشتہ روز سات میں سے پانچ پاکستانی سفیروں کو کولکتہ جانے کا ویزا دینے سے انکار کر دیا تھا۔ اپنے دفاع میں انڈیا کا موقف تھا کہ جن دو افراد کو ویزا نہیں دیا گیا ان کے پاکستان کی عسکری اداروں اور خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کے ساتھ رابطے دیکھے گئے ہیں۔

خیال رہے کہ پاکستان کولکتہ کے ایڈن گارڈنز سٹیڈیم میں 19 مارچ کو ورلڈ ٹی 20 کے میزبان انڈیا کے مدِمقابل ہو گا۔

اسی بارے میں