’جنرل راحیل شریف دوستی کا ہاتھ بڑھائیں‘

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے سربراہ الطاف حسین نے پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف سے کہا ہے کہ وہ ان کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھائیں تاکہ ان کی جماعت ملک دشمن قوتوں کے خلاف پاکستانی فوج کے شانہ بشانہ لڑے۔

ایم کیو ایم کے سربراہ نے اپنی جماعت کے 32ویں یوم تاسیس کے موقع پر اپنے لندن آفس سے اپنی جماعت کے ممبران اور حامیوں سے ویب ٹیلیویژن کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جنرل راحیل شریف ان کی جماعت پر ہونے والی زیادتیوں پر انھیں انصاف دلائیں۔

پاکستان میں اس وقت لاہور ہائی کورٹ کے ایک حکم کی وجہ سے الطاف حسین کی تقریروں کے نشر کرنے پر پابندی ہے۔ جس کی وجہ سے وہ اب بذریعہ ویب ٹیلیویژن اپنے حامیوں سے خطاب کرتے ہیں۔ آج ان کا خطاب پاکستان میں مختلف 37 مقامات پر سنا گیا۔

بھارت کی خفیہ ایجینسی ’را‘ سے رقم لینے کے الزام پر الطاف حسین نے کہا کہ جب انھوں نے آئی ایس آئی سے رقم نہیں لی تو وہ ’را‘ سے رقم کیوں لیں گے۔

انھوں نے اپنی تقریر میں روایتی معاملات کے علاوہ خاص طور پر فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف کو اپنا مخاطب بناتے ہوئے کہا کہ وہ ایم کیو ایم کو گلے لگائیں تاکہ وہ جو دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑ رہے ہیں وہ اسے جیت سکیں۔

الطاف حسین نے اس موقع پر جنرل راحیل شریف کو یہ بھی پیش کش کی کہ اگر ان کی جماعت کا کوئی بھی رکن کسی بھی جرم میں ملوث ہے تو اسے قرار واقعی سزا دیں، مگر ساتھ ساتھ ایم کیو ایم کے جو کارکن مبینہ طور پر سکیورٹی ایجنسیوں کے ہاتھوں ہلاک ہوئے ہیں انھیں بھی انصاف دلائیں۔

اس خطاب کے بعد ان افواہوں کی تردید کے لیے کہ وہ شدید بیمار ہیں اور چلنے پھرنے سے قاصر ہیں، الطاف حسین نے ایم کیو ایم کے لندن آفس میں چل پھر کردکھایا اور چند لمحے رقص بھی کیا۔

اسی بارے میں