ڈیرہ اسماعیل خان میں فائرنگ سے دو پولیس اہلکار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ bbc
Image caption پولیس اہلکاروں کے نام عمران اور فیصل بتائے گئے ہیں

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے جنوبی ضلع ڈیرہ اسماعیل خان میں دوسرے روز بھی ٹارگٹ کلنگ کے واقعے میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے دو پولیس اہلکاروں کو ہلاک کر دیا ہے۔

یہ واقعہ بدھ کی صبح بنوں روڈ پر محکمہ زراعت کے دفتر کے سامنے پیش آیا۔ پولیس کے مطابق دونوں اہلکار موٹر سائکل پر ڈیوٹی سرانجام دینے جا رہے تھے کہ راستے میں نامعلوم افراد نے ان پر فائرنگ شروع کر دی۔ دونوں اہلکاروں کو زخمی حالت میں سول ہسپتال پہنچایا گیا لیکن وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے۔

پولیس اہلکاروں کے نام عمران اور فیصل بتائے گئے ہیں۔

ڈیرہ اسماعیل خان کا بنوں روڈ انتہائی مصروف علاقہ ہے اور یہاں ہر وقت ٹریفک رواں رہتی ہے۔ اس واقعے کے بعد پولیس نے علاقے کو گھیرے میں لے کر حملہ آوروں کی تلاش کے لیے کوششیں شروع کر دی ہیں۔

شہر میں ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔ گذشتہ روز ڈیرہ اسماعیل خان کے انتہائی گنجان آباد علاقے بازار توپانوالہ میں نا معلوم افراد نے رضی الحسن شاہ ایڈووکیٹ کو فائرنگ کر رکے ہلاک کر دیا تھا ۔ رضی الحسن شاہ کی عمر 33 سال تھی اور وہ امام بارگاہ حضرت عباس کے متولی بھی تھے۔

اس سے پہلے بیس مارچ کو بھی درابن روڈ پر نا معلوم افراد نے فائرنگ کرکے اظہر عباس نامی ایک پولیس اہلکار کو ہلاک کر دیا تھا۔

ڈیرہ اسماعیل خان میں آپریشن ضرب عضب کے بعد ایک وقفے کے لیےامن و امان کی ضورتحال میں قدرے بہتی دیکھی گئی تھی جہاں ٹارگٹ کلنگ کی واقعات میں کسی حد تک کمی واقع ہوئی تھی لیکن اب ایک مرتبہ پھر اس شہر میں ان واقعات میں خطرناک حد تک اضافہ دیکھا جا رہا ہے ۔

اسی بارے میں