پسنی میں ماہی گیروں کے جال میں پھنس کر شارک ہلاک

Image caption پاکستان کی سمندری حدود میں شارک مچھلی کا شمار نایاب مچھلیوں میں ہوتا ہے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ساحلی علاقے گوادر میں نایاب شارک مچھلی ماہی گیروں کے جال میں پھنس کر ہلاک ہو گئی ہے۔

نایاب شارک گوادر کی تحصیل پسنی کے سمندری حدود میں ماہی گیروں کے جال میں پھنس گئی تھی۔

پسنی کے مقامی صحافی ساجد نور نے بی بی سی کو بتایا کہ مچھیرے سمندری حدود میں معمول کی ماہی گیری کے لیے نکلے تھے کہ اچانک اُن کے جال میں بڑی مچھلی پھنس گئی۔

انھوں نے بتایا کہ دیکھنے پر پتہ چلا کہ شارک مچھلی جال میں پھنس گئی۔ شارک کا وزن ڈیڑھ ٹن سے زیادہ تھا اور اس کی لمبائی 14 فٹ تھی۔

مقامی صحافی کا کہنا ہے کہ ماہی گیروں نے شارک کو جال سے نکال کر دوبارہ سمندر میں ڈالنے کی بھرپور کوشش کی لیکن شارک کا وزن زیادہ ہونے کی وجہ سے وہ جال سے نکل نہیں سکی۔

یاد رہے کہ پاکستان کی سمندری حدود میں شارک مچھلی کا شمار نایاب مچھلیوں میں ہوتا ہے۔ پسنی میں بولی جانے والی مقامی بلوچی زبان میں شارک مچھلی کو’بیران پاگاس‘ کہا جاتا ہے۔

اسی بارے میں