’قوم سےخطاب کرنا چاہتا ہوں، پی ٹی وی انتظامات کرے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاناما پیپرز میں وزیر اعظم کے بیٹیوں کا نام آنے کے بعد وفاقی وزرا نے اس معاملے پر قوم کو گمراہ کیا ہے: عمران خان

قومی اسمبلی میں حزب مِخالف کی دوسری بڑی جماعت پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ نے سرکاری ٹی وی پر تقریر کرنے کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان ٹیلی ویژن کے حکام کو انتظامات کرنے کے لیےایک مراسلہ تحریر کیا ہے۔

پاکستان ٹیلی ویژن ایک ریاستی ادارہ ہے اور اس ادارے کی انتظامیہ حکومت وقت کی طرف سے دی جانے والی پالیسیوں پر عمل درآمد کرنے کی پابند ہے۔

٭پاناما لیکس پر کمیشن قائم، ’تازہ لہر کو خوب سمجھتا ہوں‘

اس مراسلے میں کہاگیا ہے کہ پاناما پیپرز لیکس میں وزیر اعظم کے بیٹوں کا نام آنے کے بعد وفاقی وزرا نے اس معاملے پر قوم کو گمراہ کیا ہے اس لیے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین 10 اپریل کی شام چھ بجے قوم سے خطاب کرکے اُنھیں پاناما لیکس سے متعلق عوام کو حقائق سے آگاہ کرنا چاہتے ہیں۔

سرکاری ٹی وی پر صدر اور وزیر اعظم نے قوم سے خطاب کیا ہے اس کے علاوہ فوجی آمر بھی جمہوری حکومتوں کا تختہ اُلٹنے کے بعد بھی سرکاری ٹی وی پر قوم سے خطاب کرتے رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ PML N
Image caption پاناما لیکس میں نواز شریف کے خاندان کا نام آنے کے وزیر اعظم نے قوم سے براہ راست خطاب کیا تھا

اسلام آباد پولیس کے مطابق سنہ2014 میں پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان عوامی تحریک کے کارکنوں کی طرف سرکاری ٹی وی اور پارلیمنٹ ہاؤس پر حملہ کرنے کے مقدمات میں عمران خان اور ڈاکٹر طاہرالقادری نامزد ملزم ہیں، تاہم پولیس نے ابھی ان مقدمات میں گرفتار نہیں کیا۔

اس مراسلے میں یہ بھی کہاگیا ہے کہ چونکہ سرکاری ٹی وی قوم کے ٹیکس کے پیسوں سے چلتا ہے اس لیے حکومت کے علاوہ دوسری سیاسی جماعتوں کے اراکین بھی ٹیکس دیتے ہیں اس لیے اُن کو بھی یہ حق حاصل ہے کہ سرکاری ٹی وی پر آکر عوام کو حقائق سے آگاہ کریں۔

دوسری جانب قومی اسمبلی میں حزب مخالف کی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی نے پاناما لیکس کے معاملے پر سرکاری ٹیلی ویژن پر حزب مخالف کی جماعتوں کو کوریج نہ دینے کے معاملے پر قومی اسمبلی سیکرٹریٹ میں ایک تحریک التوا جمع کروائی ہے۔

جمعرات کو قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران سرکاری ٹیلی ویژن نے پاناما لیکس پر حکومتی وزرا اور حزب مخالف کے اراکین کا خطاب نہیں دیکھایا تھا، تاہم نجی ٹی وی چینلز نے قومی اسمبلی ہال کے باہر لگے ہوئے ٹی وی سے سکائپ کے ذریعے قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ اور عمران خان کی تقاریر برہ راست نشر کی تھیں۔

جمعہ کے روز بھی پاناما لیکس پر قومی اسمبلی کے اجلاس کے دوران حزب مخالف وزیر اعظم میاں نواز شریف کو جبکہ حکومتی بینچ عمران خان کو تنقید کا نشانہ بناتے رہے۔

اسی بارے میں