پاناما لیکس سے متعلق درخواستیں کو یکجا کرنے کا حکم

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption درخواست میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اگر کسی بھی سیاستدان پر الزامات ثابت ہوں تو انھیں نااہل قرار دیا جائے

لاہور ہائیکورٹ نے پاناما لیکس کے انکشافات سے متعلق دائر کی گئی متعدد درخواستوں کو یکجا کرنے کا حکم دیا ہے اور ان کی سماعت کے لیے گیارہ اپریل کی تاریخ مقرر کی ہے۔

لاہور ہائیکورٹ میں پانامہ لیکس میں وزیراعظم کے خاندان سے متعلق انکشافات پر پاکستان تحریک انصاف کے گوہر نواز سندھو کی درخواست کی سماعت ہوئی۔

* پاناما پیپرز اور عالمی سطح پر کہرام: خصوصی ضمیمہ

گوہر نواز سندھو نے اپنی درخواست میں یہ موقف اختیار کیا ہے کہ پانامہ رپورٹس کے مطابق وزیراعظم کا خاندان غیرقانونی طور پر سرمایہ پاکستان سے بیرون ملک منتقل کرتا رہا ہے۔ لہٰذا ایسا کرنے والے افراد کے خلاف کارروائی کی جائے۔

درخواست میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اگر کسی بھی سیاستدان پر غیرقانونی طور پر سرمایہ منتقل کرنے کے الزامات ثابت ہوں تو انھیں نااہل قرار دیا جائے۔

لاہور ہائیکورٹ میں پاناما لیکس کی جوڈیشل انکوائری کروانے اور نیب سے اس کی تحقیقات کروانے سے متعلق متعدد درخواستیں دائر کی گئیں ہیں۔

جسٹس شاہد وحید نے ان تمام درخواستوں کو یکجا کرنے کا حکم دیا۔ ان درخواستوں کی سماعت 11 اپریل کو ہوگی۔

خیال رہے کہ وزیراعظم نواز شریف پاناما لیکس میں اپنے خاندان کے مالی اثاثوں کے بارے میں ہونے والے انکشافات کی تحقیقات کے لیے ریٹائرڈ جج پر مشتمل کمیشن قائم کرنے کا اعلان کر رکھا ہے۔

اسی بارے میں