پارلیمنٹ ہاؤس اور فائیو سٹار ہوٹل میں بم کی مبینہ اطلاع

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption پولیس اور رینجرز کے اہلکاروں نے دونوں شہروں کی ناکہ بندی کرتے ہوئے ان عمارتوں کی تلاشی لینا شروع کر دی

اسلام آباد میں قانون نافد کرنے والے اداروں نے پارلیمنٹ ہاؤس کے علاوہ جڑواں شہر راولپنڈی میں واقع فائیو سٹار ہوٹل میں بم کی مبینہ اطلاعات کے بعد دونوں شہروں کی ناکہ بندی کر دی ہے۔

سنیچر کو مقامی پولیس کے مطابق اُنھیں وزارت داخلہ کی جانب سے اطلاع موصول ہوئی کہ اُنھیں ایک گمنام ٹیلی فون کے ذریعے بتایا گیا کہ مزکورہ عمارتوں میں دھماکہ خیز مواد رکھا گیا ہے جو کچھ کے دیر کے بعد پھٹ جائےگا۔

ان اطلاعات کے بعد پولیس اور رینجرز کے اہلکاروں نے دونوں شہروں کی ناکہ بندی کرتے ہوئے ان عمارتوں کی تلاشی لینا شروع کر دی۔ بم ڈسپوزل سکواڈ کے علاوہ سراغ رساں کتوں کی بھی مدد حاصل کی گئی۔

پولیس نے پارلیمنٹ ہاؤس کے علاوہ ڈی چوک کے سامنے گرین ایریا کی بھی تلاشی لی۔ تین گھنٹوں سے زائد وقت تک ان عمارتوں کی تلاشی لینے کے بعد پارلیمنٹ ہاؤس اور راولپنڈی کے ہوٹل کو کلیئر قرار دیا گیا۔

وزارت داخلہ کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ خفیہ اداروں کی رپورٹ میں اس بات کی نشاندہی کی گئی ہے کہ کالعدم تنظیموں کی طرف سے جن اہم عمارتوں کو نشانہ بنانے کی منصوبہ بندی کی گئی ہے اس میں پارلیمنٹ ہاؤس سرفہرست ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption موت کی سزا پانے والے ممتاز قادری کے چہلم کے موقع پر وفاقی دارالحکومت کے مختلف علاقوں میں پولیس کی نفری بڑھا دی گئی ہے

پارلیمنٹ ہاؤس میں قومی اسمبلی کا اجلاس جاری ہے اور یہ اجلاس 12 اپریل کو دوبارہ شروع ہوگا۔

دوسری طرف گورنر پنجاب سلمان تاثیر کے قتل کے مقدمے میں موت کی سزا پانے والے پنجاب پولیس کے اہلکار ممتاز قادری کے چہلم کے موقع پر بھی پاکستان سنی تحریک نے اُن کے حامیوں کو رہا نہ کرنے کے خلاف پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے ایک مرتبہ بھر احتجاج کی دھمکی دے رکھی ہے جس کے بعد وفاقی دارالحکومت کے مختلف علاقوں میں پولیس کی نفری بڑھا دی گئی ہے جبکہ کسی بھی ناخشگوار واقعے سے نمٹنے کے لیے فوج کو سٹینڈ بائی رکھا گیا ہے۔

ممتاز قادری کے رشتہ داروں کا کہنا ہے کہ اُنھوں نے کسی کو بھی اس چہلم کی تقریب میں شرکت کرنے کی دعوت نہیں دی۔

اس سے پہلے بھی ممتاز قادری کے چہلم کی رسومات ادا کرچکے ہیں جس کے بعد اُنھوں نے پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے چار روز تک دھرنا دیا تھا۔

اسی بارے میں