ایان علی کو بیرون ملک جانے کی اجازت مل گئی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ایان علی ان دنوں ضمانت پر ہیں۔ ملزمہ کو گذشتہ برس گرفتار کیا گیا تھا

پاکستان کی عدالت عظمیٰ نے غیر ملکی کرنسی بیرون ملک سمگل کرنے کے مقدمے کی ملزمہ ماڈل ایان علی کو بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی ہے۔

سپریم کورٹ نے ملزمہ ایان علی کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ یعنی ای سی ایل سے نکالنے کے خلاف وزارت داخلہ اور کسٹم انٹیلی جنس کی طرف سے دائر کی گئی درخواستیں مسترد کردی ہیں۔

وزارت داخلہ کو کسٹم حکام کی طرف سے یہ درخواستیں سندھ ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف دائر کی گئی تھیں جس میں سندھ ہائی کورٹ نے گذشتہ ماہ ایان علی کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دیا تھا۔ عدالت نے چھ اپریل کو ان درخواستوں پر فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔

سپریم کورٹ نے ان درخواستوں کو خارج کرتے ہوئے حکم دیا ملزم کے خلاف عدالتوں میں زیر التوا مقدمے کو بنیاد بنا کر اس کی نقل وحرکت پر پابندی عائد نہیں کی جاسکتی۔

بدھ کے روز جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے سندھ ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف نظرثانی کی درخواستوں کو خارج کرتے ہوئے کہا کہ حکومت خود اس بات کا فیصلہ کرے کہ کس کو ای سی ایل میں ڈالنا ہے اور کس کا نام ای سی ایل سے نکالنا ہے لیکن اس بات کو بھی سامنے رکھنا چاہیے کہ جرم کی نوعیت کیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption ماڈل ایان علی پاکستان کی تاریخ میں پہلی ملزمہ ہیں جنھیں غیر ملکی کرنسی بیرون ملک سمگل کرنے کے مقدمے میں چار ماہ سے زائد عرصہ جیل میں گزارنا پڑا تھا

اس سے پہلے کسٹم کی ایک عدالت نے ملزمہ کو پانچ لاکھ امریکی ڈالر دبئی سمگل کرنے کے مقدمے میں پانچ کروڑ روپے جرمانے کی سزا کے علاوہ اُن سے برازد کی گئی غیر ملکی کرنسی ضبط کرنے کا بھی حکم دیا تھا۔

اس کے علاوہ سپشل جج سینٹرل کی عدالت میں ماڈل ایان علی پر اس مقدمے میں فردجرم بھی عائد کی جاچکی ہے جبکہ ملزمہ نے اس عدالتی فیصلے کو لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بینچ میں چیلنج کر رکھا ہے جس کی ابھی تک سماعت نہیں ہوئی ہے۔

ایان علی ان دنوں ضمانت پر ہیں۔ ملزمہ کو گذشتہ برس گرفتار کیا گیا تھا۔

ماڈل ایان علی پاکستان کی تاریخ میں پہلی ملزمہ ہیں جنھیں غیر ملکی کرنسی بیرون ملک سمگل کرنے کے مقدمے میں چار ماہ سے زائد عرصہ جیل میں گزارنا پڑا تھا۔

محکمہ کسٹم کے ایک اہلکار کے مطابق اب تک دو غیر ملکی خواتین کو غیر ملکی کرنسی سمگل کرنے کے مقدمات میں گرفتار کیا گیا لیکن ایک ہفتے کے دوران اُن کی ضمانت ہوگئی تھی۔

اسی بارے میں