بلوچستان میں فائرنگ سے سیاسی جماعت کےرہنما ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع مستونگ میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے نیشنل پارٹی کے ایک رہنما سمیت دو افراد ہلاک ہوگئے۔

نیشنل پارٹی کے رہنما سردار غلام حسین پر حملے کا واقعہ ضلع مستونگ کے علاقے کردگاپ میں پیش آیا۔

کردگاپ میں انتظامیہ ذرائع کے مطابق حملے کے نتیجے میں سردار غلام حسین سمیت دو افراد ہلاک اور ایک شخص زخمی ہوا جبکہ حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

* پرامن فورس کے رضاکار کے مکان پر حملہ، بچی سمیت دو ہلاک

کراچی سے فون پر اس واقعے کی تفصیل بتاتے ہوئے نیشنل پارٹی کے مرکزی ترجمان جان محمد بلیدی کا کہنا تھا کہ سردار غلام حیسن کے پاس ایک زیرِ تعمیر سکول کا ٹھیکہ تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ سردار غلام حیسن زیر تعمیر سکول کام دیکھنے گئے تھے جہاں مسلح افراد نے ان کو نشانہ بنایا۔

سردار غلام حسین کا شمار نہ صرف پارٹی کے اہم رہنماؤں میں ہوتا تھا بلکہ ان کا تعلق بلوچ قبیلہ سرپرہ کے سردار خاندان سے تھا۔

وہ مستونگ کے ضلعی کونسل کے چیئر مین بھی رہے تھے۔

ادھر بلوچستان کے وزیر اعلٰی نواب ثنا اللہ زہر ی نے ایک بیان میں اس واقعے کی مذمت کی ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیر اعلیٰ نے اس واقعے میں ملوث افراد کی فوری گرفتاری کا حکم دیا ہے۔

اسی بارے میں