پشاور میں فائرنگ سے پولیس اہلکار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption پشاور اور صوبے کے دیگر چند ایک علاقوں میں ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں ایک مرتبہ پھر تیزی دیکھی جا رہی ہے

خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں منگل کی صبح سویرے ٹارگٹ کلنگ کے ایک واقعہ میں پولیس اہلکار کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔ اس واقعے میں ایک راہگیر بچہ زخمی ہوا ہے۔

پولیس اہلکاروں نے بتایا کہ اے ایس آئی قیصر شاہ رات بھر ڈیوٹی سرانجام دینے کے بعد واپس گھر جا رہے تھے۔ یہ واقعہ اندرون پشاور شہر تھانہ یکہ توت کے علاقے میں پنج کٹہ کے مقام پر پیش آیا۔

پولیس کے مطابق موٹر سائیکل پر سوار نا معلوم افراد نے اے ایس آئی پر فائرنگ کی اور موقعے سے فرار ہو گئے۔

قیصر شاہ موقع پر دم توڑ گئے جبکہ ایک راہگیر بچہ اس میں زخمی ہوا ہے۔ بچے کی عمر گیارہ سال بتائی گئی ہے جسے ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

پولیس اہلکاروں نے بتایا کہ اے ایس آئی قیصر شاہ پشاور کے مصافاتی علاقے موسی زئی کا رہائشی تھا۔ انھوں نے کہا کہ قیصر شاہ کا تعلق اہل تشیع سے نہیں تھا۔

پشاور اور صوبے کے دیگر چند ایک علاقوں میں ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں ایک مرتبہ پھر تیزی دیکھی جا رہی ہے۔

دو روز پہلے پشاور کے مصروف علاقے گلبہار میں نا معلوم افراد نے ایئر فورس سے ریٹائرڈ معروف ادیب اور شاعر صابر حسین اور ان کی بہو کو اس وقت فائرنگ کرکے ہلاک کر دیا تھا جب وہ بہو کو ہسپتال اور پوتے کو سکول چھوڑنے جا رہے تھے۔ اس حملے میں ان کا پوتا محفوظ رہا۔ صابر حسین کی بہو مقامی ہسپتال میں ڈاکٹر تھیں۔

اسی بارے میں