احتساب کا آغاز وزیر اعظم سے ہو گا: عمران خان

تصویر کے کاپی رائٹ Nasir Khan Mohmand

پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے مطالبہ کیا ہے کہ چیف جسٹس کے ماتحت پاناما لیکس کے معاملے پر کمیشن قائم کیا جائے اور وہ چاہتے ہیں کہ حزب اختلاف کی تمام جماعتیں ایک آواز میں کمیشن کا مطالبہ کریں۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ ’ہمیں 200 نہیں، صرف وزیراعظم کا احتساب چاہیے، وہ حکومت کرنے کا اخلاقی جواز کھو چکے ہیں۔‘

٭ ’وزیراعظم اپنی بے گناہی ثابت کریں‘

٭ وزیراعظم مستعفی ہوں بلاول بھٹو اور عمران حان یک آواز

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’آپ کی جتنی مرضی تحریک انصاف کے لوگوں کا احتساب کریں لیکن سب سے پہلے احتساب کا آغاز وزیر اعظم سے ہو گا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاناما پیپز کے منظر عام پر آنے کے بعد عمران خان نے وزیراعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا اور جلسوں کا آغاز کیا

عمران خان صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں پاکستان تحریک انصاف کے جلسے میں خطاب کر رہے تھے جسے پنجاب حکومت کے گڑھ میں عمران خان کا سیاسی قوت کا مظاہرہ بھی سمجھا جا رہا ہے۔

عمران خان نے وزیراعظم نواز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ’میاں صاحب اگر پاناما لیکس کے معاملے پر کرپشن ثابت ہوئی تو آپ گھر نہیں جیل جائیں گے۔‘

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت ہے، وزیراعظم کو جواب دینا پڑے گا۔ انھوں نے کہا کہ جمھوریت میں حکومت غلط کرے، عوام کا پیسہ ضائع کرے تو اپوزیشن پوچھتی ہے۔ ’یہ جمہوریت ہے بادشاہت نہیں۔‘

Image caption وزیراعظم نے گذشتہ روز اپنے بیان میں کہا سپریم کورٹ مجوزہ تحقیقاتی کمیشن کے ٹی او آرز میں تبدیلی کر سکتی ہے

لاہور کے علاقے مال روڈ پر ہونے والے جلسے میں عمران خان پارٹی کے دیگر قائدین کے ساتھ جلسے کے پنڈال میں بڑی تعداد میں لاہور کے لوگ پہنچے ، اور انتہائی پرجوش انداز میں حکومت کے خلاف نعرہ بازی کرتے رہے ـ

اس موقع پر مختلف شہروں سے کارکنان قافلوں کی شکل میں بھی پہنچے جبکہ جلسے کے لیے سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔

عمران خان نے اتوار کو فیصل آباد میں جلسے کا اعلان کیا ہے۔

واضع رہے کہ گزشتہ ہفتے اسلام آباد میں جلسے کے دوران عمران خان نے سندھ میں انسداد کرپشن تحریک کا بھی اعلان کیا تھا ـ

اسی بارے میں