لوئر دیر: بجلی کے پول اکھاڑنے پر رکن اسمبلی گرفتار

Image caption بخت بیدار کی سربراہی میں تحصیل و ٹاؤن ناظمین و دیگر سیاسی جماعتوں کے 21 اراکین نے چکدرہ میں سوات شموزئی کو جانے والے بجلی کے فیڈر کے کھمبے اکھاڑ پھینکے

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کے ضلع لوئر دیر میں پولیس نے قومی وطن پارٹی سے تعلق رکھنے والے ممبر صوبائی اسمبلی بخت بیدار کے خلاف مقدمہ درج کرکے انہیں گرفتار کرلیا ہے۔

تھانہ چکدرہ کے ایس ایچ او جمال خان نے بی بی سی کو بتایا کہ ممبر صوبائی اسمبلی بخت بیدار کو سوات شموزئی کو جانے والے بجلی کے فیڈر پلر اکھاڑنے پر گرفتارکیاگیا۔

پولیس کے مطابق منگل کو بخت بیدار کی سربراہی میں تحصیل و ٹاؤن ناظمین و دیگر سیاسی جماعتوں کے 21 اراکین نے چکدرہ میں سوات شموزئی کو جانے والے بجلی کے فیڈر کے کھمبے اکھاڑ پھینکے۔

سوات میں صحافی انور شاہ کے مطابق شموزئی فیڈر پر گذشتہ تین سالوں سے کام جاری ہے اور شموزئی فیڈر سے چکدرہ گریڈ سٹیشن پر کوئی منفی اثر نہیں پڑے گا تاہم دیر لوئر کے ممبران اسمبلی اور ادیزئی جرگہ اسے ایک سیاسی مسئلہ بنا رہے ہیں جس سے علاقے میں تصادم کا خطرہ جنم لے رہا ہے۔

انتظامیہ نے بخت بیدار سے سرکاری سیکورٹی واپس لی ہے جس کے بعد بخت بیدار نے میڈیا کو بتایا کہ انہیں پہلے سے دھمکیاں مل رہی ہے اور اب ان سے سکیورٹی بھی واپس کرلی گئی ہیں۔

ان کے بقول ’ان کی زندگی کو لاحق خطرات بڑھ گئے ہیں اور اگر انہیں کچھ ہوا تو انتظامیہ اس کے لیے ذمہ دار ہوگی۔‘

پولیس کے مطابق گرفتار ہونے والوں میں ممبر صوبائی اسمبلی بخت بیدار کے علاوہ قومی وطن پارٹی کے ضلعی چیئرمین امان اللہ خان ، یونین کونسل ادینزئی کے ناظم قمر زمان و نائب ناظم ، یونین کونسل چکدرہ اے این پی کے ناظم واصل خان ودیگر شامل ہیں۔ جبکہ دیگر ملوث تمام افراد کو بھی گرفتار کرلیاگیا ہے۔

اسی بارے میں