بلوچستان: آواران سے اغوا ہونے والے لیویز اہلکار رہا

Image caption اہلکاروں کو نامعلوم مسلح افراد نے بزداد کے علاقے سے اغوا کیا تھا

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع آواران سے اغوا ہونے والے لیویز فورس کے چار اہلکاروں کو چھوڑ دیا گیا تاہم اغوا کار ان کا اسلحہ اور گاڑی لے گئے ہیں۔

ان اہلکاروں کے اغوا کا واقعہ گذشتہ شب پیش آیا تھا۔

آواران میں انتظامیہ کے ذرائع نے بتایا کہ لیویز فورس کے چار اہلکاروں کو اس وقت بزداد کے علاقے سے اغوا کیا گیا جب وہ فورس کی ایک گاڑی میں آواران سے گیشگور کی جانب رہے تھے۔

ذرائع کے مطابق لیویز فورس کے اہلکاروں کو مسلح افراد نے اتوار کے روز چھوڑ دیا لیکن ان کا اسلحہ اور گاڑی ساتھ لے گئے۔

آواران ہی کے تحصیل مشکے کے علاقے میں ایک اور واقعے میں فائرنگ سے ایک شخص ہلاک ہوگیا ہے۔

انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق نامعلوم افراد مقتول کے گھر آئے اور ان کو باہر بلایا گیا۔

جونہی مقتول باہر آئے تو مسلح افراد نے ان کو گولی مارکر ہلاک کر دیا۔

اس شخص کو ہلاک کرنے کے محرکات تاحال معلوم نہیں ہوسکے۔

آواران کا شمار بلوچستان کے ان علاقوں میں ہوتا ہے جو کہ شورش سے متاثر ہیں۔

آواران میں گزشتہ کئی سالوں سے بدامنی کے واقعات رونما ہورہے ہیں تاہم سرکاری حکام کا دعویٰ ہے کہ وہاں اب پہلے کے مقابلے میں حالات بہتر ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں