کاسا 1000 توانائی منصوبے کا افتتاح آج

جمہوریہ قرغز، تاجکستان، افغانستان اور پاکستان کے توانائی کے مشترکہ منصوبے کاسا 1000 کا بدھ کے روز تاجکستان کے درالحکومت دوشنبے میں افتتاح کیا جائے گا۔

پاکستانی وزیرِ اعظم نواز شریف اس تقریب میں شرکت کے لیے دوشنبے پہنچ گئے ہیں۔

اس منصوبے کے تحت پاکستان کو گرمیوں کے موسم (یکم مئی تا 30 ستمبر) میں 1300 میگاواٹ بجلی مہیا کی جائے گی۔ یہ منصوبہ 2018 میں مکمل ہو گا اور توقع ہے کہ اس سے پاکستان میں توانائی کے بحران پر قابو پانے میں مدد ملے گی۔

پروجیکٹ کے تحت تاجکستان سے براستہ افغانستان پاکستان تک 750 کلومیٹر لمبی ہائی وولٹیج لائن بچھائی جائے گی، اور اس کے ڈی سی کنورٹر سٹیشن سنگتودہ، کابل اور نوشہرہ میں قائم کیے جائیں گے، جب کہ جمہوریہ قرغز اور تاجکستان کے درمیان ایک اے سی لنک قائم کیا جائے گا۔

کاسا 1000 کے تحت پاکستان کا حصہ 1000 میگاواٹ بنتا ہے، جب کہ افغانستان کا حصہ 300 میگاواٹ ہے، البتہ افغانستان کو مستقبل قریب میں اس کی ضرورت نہیں ہے، اس لیے یہ بھی پاکستان کے لیے دستیاب ہو گا۔

کاسا 1000 کی مجموعی لاگت کا تخمینہ ایک ارب 17 کروڑ ڈالر لگایا گیا ہے۔ بجلی کا ٹیرف 9.48 سینٹ فی کلو واٹ ہو گا، جس میں تمام اخراجات شامل ہیں۔

اسی بارے میں