مردان میں بم حملہ، پولیس اہلکاروں سمیت دس افراد زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption س سے پہلے مردان میں نادرا اور ایکسائز کے دفتر پر خودکش حملے ہوئے تھے جس میں متعدد افراد ہلاک ہوگئے تھے

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کے ضلع مردان میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک بم دھماکے میں کم سے کم دو پولیس اہلکاروں سمیت دس افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

پولیس کے مطابق یہ واقعہ پیر کی رات تقریباً دس بجے کے قریب مردان سٹی تھانے سے چند فرلانگ کے فاصلے پر ہوا۔

سٹی تھانے کے انچارج عاشق حسین نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ پولیس موبائل میں گشت کے لیے تھانے سے روانہ ہوئے تواس دوران سائیکل پر سوار ایک حملہ آوار نے ان کا پیچھا کیا۔

انھوں نے کہا کہ حملہ آور کے ہاتھ میں دستی بم تھا تاہم حملے سے پہلے پولیس اہلکاروں نے ان پر فائرنگ کردی جس سے ایک زوردار دھماکہ ہوا۔ پولیس اہلکار کا کہنا تھا کہ حملہ آور مبینہ خودکش بمبار تھا جس کا ہدف پولیس موبائل گاڑی تھی۔ ان کے مطابق دھماکہ حملہ آور کے جسم سے باندھے ہوئے بارودی مواد پھٹنے سے ہوا۔

پولیس افسر نے مزید بتایا کہ جائے وقوعہ سے حملہ آور کا سر اور ٹانگیں بھی ملی ہیں جس سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ حملہ آور خودکش تھا۔

دھماکے میں دو پولیس اہلکاروں سمیت دس افراد زخمی ہوئے ہیں جن میں عام شہری بھی شامل ہیں۔

خیال رہے کہ مردان میں حالیہ چند مہینوں کے دوران تشدد کے واقعات میں اضافہ دیکھا گیا ہے۔ اس سے پہلے مردان میں نادرا اور ایکسائز کے دفتر پر خودکش حملے ہوئے تھے جس میں متعدد افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

ان حملوں کی ذمہ داری کالعدم تنظیموں کی طرف سے قبول کی گئی تھی۔

اسی بارے میں