نوشکی سے دو لاشیں برآمد، کوئٹہ فائرنگ میں دو اہلکار زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں فائرنگ کے ایک واقعے میں دو پولیس اہلکار شدید زخمی ہوئے جبکہ ضلع نوشکی سے دو افراد کی تشدد زدہ لاشیں برآمد کی گئیں۔

کوئٹہ میں پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کا واقعہ اتوار کی شب ایئر پورٹ روڈ پر کلی الماس کے علاقے میں پیش آیا۔

زرغون آباد پولیس سٹیشن کے ایک اہلکار نے بتایا کہ کلمی الماس میں ایک نجی بجلی گھر پر دو پولیس اہلکار تعینات تھے جہاں نامعلوم مسلح افراد نے ان پر حملہ کیا۔

حملے میں دونوں اہلکار شدید زخمی ہوئے جن کو علاج کے لیے سی ایم ایچ منتقل کردیا گیا ہے۔

دوسری جانب دو افراد کی لاشیں ضلع نوشکی کے علاقے خاخوئی سے برآمد کی گئی ہیں۔

نوشکی میں انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق اس علاقے میں لاشوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے پر ان کو تحویل میں لینے کے لیے لیویز فورس کے اہلکاروں کو علاقے میں بھیجا گیا۔

ذرائع نے بتایا کہ دونوں افراد کو گولیاں مارکر ہلاک کیا گیا ہے۔ تاحال ان افراد کو ہلاک کرنے کے محرکات معلوم نہیں ہوسکے۔

لاشوں کو شناخت اور پوسٹ مارٹم کے لیے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال نوشکی منتقل کیا جارہا ہے۔

ضلع نوشکی کے جس علاقے سے یہ لاشیں ملی ہیں وہ تین اضلاع قلات، نوشکی اور خاران کا سنگم ہے۔ تاحال یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ ان افراد کا تعلق ان اضلاع میں سے کس سے ہے۔

ضلع نوشکی بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ سے مغرب میں ڈیڑھ سو کلومیٹر کے فاصلے پر مغرب میں واقع ہے۔

اسی بارے میں