سندھ حکومت کو احتساب کے لیے قانون سازی کی ہدایت

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بلاول بھٹو پارٹی کی تنظیم نو میں خصوصی دلچسپی لے رہے ہیں

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے صوبۂ سندھ میں غیر جانبدارانہ اور منصفانہ احتساب کے لیے وزیراعلٰی سندھ قائم علی شاہ کو سول سوسائٹی سے مشاورت کے بعد قانون سازی کرنے کی ہدایت کی ہے۔

بلاول بھٹو زرداری نے صوبے میں احتساب کے لیے قانون سازی کرنے کی ہدایت ایک ایسے وقت دی ہے جب مرکز کی سطح پر پارٹی حکمران مسلم لیگ ن کے سربراہ نواز شریف کے خاندان کے احتساب کا مطالبہ کر رہی ہے۔

دوسری طرف سندھ حکومت اور پاکستان پیپلز پارٹی پر کرپشن کے حوالے سے شدید تنقید اور الزامات عائد کیے جاتے ہیں۔

کراچی میں پارٹی کی صوبائی رابط کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے کہا کہ پارٹی کی تنظیم نو کو تیز کیا جائے اور اس عمل میں پارٹی کارکنوں کو بھرپور شمولیت دی جائے۔

سندھ کی رابطہ کمیٹی کے اجلاس کے بعد جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا کہ بلاول بھٹو زرداری نے خواتین، یوتھ، مزدوروں اور طلبا کے علیحدہ اجلاس کیے جائیں۔

سندھ رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں وزیراعلٰی سندھ قائم علی شاہ، سینیٹر شیری رحمان کے علاوہ کمیٹی کے ارکان نثار کھوڑو، مراد علی شاہ، مولا بخش چانڈیو، نفیسہ شاہ اور راشد ربانی نے شرکت کی۔

بلاول بھٹو زرداری نے کمیٹی کو ہدایت کی کہ خواتین کی شمولیت کو ہر سطح پر یقینی بنایا جائے۔

کمیٹی نے صوبے میں جاری تنظیم نو کے بارے میں چیئرمین کو رپورٹ پیش کی اور بتایا کہ اب تک صوبے کے آٹھ ضلعوں میں ورکروں کے اجلاس ہوگئے ہیں اور ان کی روشنی میں سفارشات اتفاق رائے سے مرتب کر لی گئی ہیں۔

یاد رہے کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے گذشتہ ماہ تمام صوبوں کی پارٹی تنظیموں کو توڑ دیا تھا اور پارٹی کی تنظیِم نو کے لیے رابطہ کمیٹیاں تشکیل دے دی گئی تھیں۔

اسی بارے میں