چینی باشندے کو نو سال قید، دوبارہ پاکستان آنے پر تاحیات پابندی

Image caption جیانچیو ایک ماہ کے ویزے پر پاکستان آئے تھے

پاکستان کے شمالی علاقے گلگت میں انسدادِ دہشت گردی کی عدالت کے جج راجہ شہباز خان نے چینی باشندے وانگ جیانچیو کو غیر قانونی اسلحہ رکھنے کا جرم ثابت ہونے پر نو سال قید کی سزا سنائی ہے۔

انسداد دہشت گردی کے عدالت کے فیصلے میں کہا گیا ہے کہ مجرم دوبارہ پاکستان نہیں آ سکے گا۔

مجرم نے دوران سماعت اس بات کا اعتراف کیا تھا کہ انھوں نے پاکستان سے چار پستول اور دو سو سے زائد گولیاں خریدیں جنھیں وہ چین لے جانا چاہتے تھے۔ عدالت نے اپنے فیصلے میں آئی جی پنجاب کو حکم دیا ہے کہ جس اسلحہ ڈیلر نے چینی باشندے کو اسلحہ فروخت کیا اس کے خلاف کارروائی کی جائے۔

یاد رہے کہ چینی باشندے وانگ جیانچیو کو 24 مئی کو پاک چین سرحدی علاقے میں ہنزہ پولیس نے ایک کارروائی کے دوران گرفتار کیا تھا۔ ان کے قبضے سے اسلحے کے علاوہ دوربین اور نقشے بھی برآمد ہوئے تھے۔

Image caption جیانچو کے قبضے سے چار غیر قانونی پستول برآمد ہوئے تھے

جیانچیو کو خنجراب سے گرفتاری کے بعد گلگت منتقل کر دیاگیا تھا۔ بتایا جاتا ہے کہ جیانچیو ایک ماہ کے ویزے پر پاکستان پہنچے تھے اور 14 دن اسلام آباد میں رہنے کے بعد وہ بس کے ذریعے ہنزہ اور پھر سوست کے علاقے پہنچے اور وہاں سے ٹیکسی کے ذریعے خنجراب کا سفر اختیار کیا۔

بتایا جاتا ہے کہ جیانچیو راستے میں تصویریں کھینچنے کا کہہ کر اتر گئے اور خاصی دیر تک نہیں واپس نہیں لوٹے جس پر ٹیکسی ڈرائیور نے قریبی پولیس چوکی پر اطلاع دی جس پر پولیس نے ان کی تلاش شروع کردی اور انھیں ایک گلیشئر کے قریب سے گرفتار کیا جہاں ان کے بیگ سے مذکورہ اسلحہ برآمد ہوا۔

اسی بارے میں