’افغان سرحد پر غیر قانونی نقل و حرکت روکنا ضروری ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

پاکستان کی فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے کہا کہ پاکستان کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کامیابیاں مل رہی ہیں لیکن پاکستان اور افغانستان کی سرحد پر غیر قانونی نقل و حمل روکنے کے لیے موثر سرحدی انتظام کی ضرورت ہے۔

سنیچر کو روالپنڈی میں امریکہ کانگریس کی آرمڈ سروسز کمیٹی کے چیئرمین سینیٹر جان مکین کی سربراہی میں کانگریس کے وفد نے آرمی چیف سے ملاقات کی۔

آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ آرمی چیف سے ملاقات میں باہمی اُمور اور علاقائی سکیورٹی کے علاوہ خصوصی طور افغانستان کے حالات پر بات چیت ہوئی۔

آرمی چیف نے امریکی کانگریس کے وفد کو پاکستان کی سکیورٹی کو لاحق خطرات کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا۔

جنرل راحیل شریف نے کہا کہ دہشت گردوں کے خلاف جاری آپریشن ضربِ عضب سے پاکستان کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کامیابیاں ملی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان طویل اور دشوار گزار سرحد پر غیر قانونی نقل و حرکت روکنے کے لیے سرحدی انتظام موثر کرنے کی ضرورت ہے۔

پاکستان کی فوج کے سربراہ کا کہنا تھا کہ مستحکم اور پر امن افغانستان پاکستان کے حق میں ہے اور پاکستان اور افغانستان کے درمیان بہتر تعلقات خطے کے امن و استحکام کے لیے ضروری ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

یاد رہے کہ گذشتہ چند ہفتوں میں پاکستان اور افغانستان کے درمیان طورخم سرحد پر گیٹ لگانے کے تنازعے پر سرحد بند کر دی گئی تھی۔

سینیٹر جان مکین نے دہشت گردوں کے خلاف جاری آپریشن ضربِ عضب کو سراہا۔ انھوں نے کہا انسدادِ دہشت گردی کے لیے آپریشن میں کامیابی دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پاکستان کے عزم کو ظاہر کرتی ہیں۔

آرمڈ سروسز کمیٹی کے چیئرمین سینیٹر جان مکین نےکہا کہ امریکہ کو پاکستان کے ساتھ کثیر جہتی تعلقات کو فروغ دینے کی ضرورت ہے تاکہ خطے میں امن قائم ہو سکے۔

یاد رہے کہ امریکی کانگریس کے وفد نے ایک ایسے موقع پاکستان کا دورہ کیا ہے کہ جب امریکی کانگریس کی کمیٹی نے پاکستان کو ایف 16 طیارے خریدنے کے لیے دی جانے والے امداد کو حقانی نیٹ ورک کے خلاف کارروائی سے مشروط کر دیا ہے۔

امریکہ کا مطالبہ رہا ہے کہ پاکستان حقانی نیٹ ورک کے خلاف کارروائیاں کرے جو پاکستان کی سر زمین سے امریکی میں اتحادی افواج کے خلاف منصوبہ کرتے ہیں۔

پاکستان کا کہنا ہے کہ وہ حقانی نیٹ ورک سمیت تمام دہشت گردوں کے خلاف بلا امتیاز کارروائی کر رہا ہے۔

اسی بارے میں