کوئٹہ میں فائرنگ سے پولیس اہلکار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption رواں مہینے کے دوران پولیس اہلکاروں پر یہ دوسرا حملہ ہے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کر کے پولیس کے ایک اسسٹنٹ سب انسپکٹر کو ہلاک کر دیا ہے۔

مقامی پولیس کے ایک اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ منگل کی شب سریاب تھانے کے اے ایس آئی عزیز الرحمان پر یہ حملہ اس وقت ہوا جب وہ ڈیوٹی کے بعد گھر جا رہے تھے۔

٭ کوئٹہ کی مسجد میں ٹارگٹ کلنگ

٭ نوشکی سے دو لاشیں برآمد

اہلکار کے مطابق ان پر چھکی شاہوانی کے علاقے میں نامعلوم مسلح افراد نے حملہ کیا جس میں وہ شدید زخمی ہوئے۔

انھیں علاج کے لیے سول ہسپتال منتقل کردیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسے۔

اے ایس آئی کے قتل کے بارے میں تحقیقات کا حکم دیا گیا ہے۔

رواں مہینے کے دوران پولیس اہلکاروں پر یہ دوسرا حملہ ہے۔

چار جولائی کو چمن پھاٹک کے علاقے میں نامعلوم مسلح افراد نے ایک مسجد کے اندر فائرنگ کر کے پولیس کے ایک انسپکٹر کو ہلاک کیا تھا۔

اس سے قبل جون کے آخری ہفتے میں بھی کوئٹہ شہر میں سریاب کے علاقے میں پولیس اہلکاروں پر دو حملے ہوئے تھے جن میں چار پولیس اہلکار ہلاک ہوئے تھے۔

رواں سال اب تک کوئٹہ شہر میں پولیس اہلکاروں پر ہونے والے حملوں میں 34 پولیس اہلکار ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے ہیں۔

بلوچستان میں حالات کی خرابی کے بعد سے بدامنی کے دیگر واقعات کے علاوہ پولیس اہلکاروں پر بھی حملوں کا سلسلہ جاری ہے تاہم سرکاری حکام کا کہنا ہے کہ پہلے کے مقابلے میں اب حالات میں بہتری آئی ہے۔

اسی بارے میں