’انڈین وزیر داخلہ آئندہ ہفتے پاکستان آئیں گے‘

تصویر کے کاپی رائٹ bbc
Image caption انڈیا کے وزیر داخلہ کے دورۂ پاکستان کی تصدیق پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان نے کی

پاکستان کے دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ انڈیا کے وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ آئندہ ہفتے اسلام آباد میں سارک وزرائے داخلہ کانفرنس میں شرکت کے لیے آئیں گے۔

جمعرات کو پاکستانی دفترخارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نے ہفتہ وار بریفنگ کے دوران انڈیا کے وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کے دورۂ پاکستان کی تصدیق کی۔

دفتر خارجہ کے ترجمان نے بریفنگ کے دوران کہا کہ انڈیا کے راج ناتھ سنگھ جنوبی ایشیائی علاقائی تعاون کی تنظیم (سارک) کانفرنس میں شرکت کے لیے پاکستان آ رہے ہیں۔

٭ ’پہلے امن پھر جس سے بات کرنی ہوگی کریں گے‘

٭ ’کشمیر کے مستقبل کا فیصلہ انڈیا نہیں کشمیری کریں گے‘

انڈیا کے وزیرداخلہ کے ساتھ ہونے والی ملاقات میں انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی کے معاملے کو اٹھانے کے حوالے سے سوال کے جواب میں نفیس ذکریا نے کہا کہ ’انھیں فی الحال راج نات سنگھ کے ساتھ ہونے والی ملاقات کے ایجنڈے کا علم نہیں۔ تاہم اگر ان کے ساتھ پاکستانی حکام کی کوئی ملاقات ہوئی تو کشمیر کا معاملہ ان کے ایک اہم ایجنڈے میں سے ہوگا۔‘

سارک کانفرنس آئندہ ماہ تین اور چار اگست کو پاکستان میں ہو رہی ہے۔

انڈیا کے وزیر داخلہ کا دورۂ پاکستان ایک ایسے وقت میں ہو رہا ہے جب دونوں ممالک کے درمیان انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں پیش آنے والے حالیہ واقعات پر کشیدگی پائی جاتی ہے اور دونوں ممالک کے جانب سے سخت بیانات کا تبادلہ بھی ہو رہا ہے۔

گذشتہ دنوں راج ناتھ سنگھ نے انڈیا کے زیر انتظام کشمیر کا دورہ کیا تھا اور اپنے دورے کے دوران کا کہنا تھا کہ ’کشمیر میں پاکستان کا کردار صحیح نہیں ہے۔ کشمیر پر پاکستان کو اپنی سوچ بدلنی چاہیے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption راج ناتھ سنگھ نے گذشتہ ہفتے انڈیا کے زیر انتظام کشمیر کا دورہ کیا تھا

اس سے قبل انھوں نے یہ بھی کہا تھا کہ پاکستان انڈیا کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کر رہا ہے اور اگر ملک میں کسی بھی طرح کی دہشت گردی ہے تو وہ پاکستان کی حمایت یافتہ ہے۔

اس پر پاکستان کے مشرِ خارجہ سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ ’وقت آگیا ہے کہ انڈیا جموں اور کشمیر کے عوام کو اقوامِ متحدہ کی نگرانی میں کرائے جانے والی رائے شماری میں حقِ خود ارادیت کو موقع فراہم کرے، جب عوام کی اکثریت انڈیا یا پاکستان کے ساتھ الحاق کا فیصلہ کرے گی تو دنیا کشمیری عوام کا فیصلہ تسلیم کرے گی۔‘

اسی بارے میں