آواران میں فائرنگ، استاد اور محکمہ تعلیم کا افسر ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ضلع آوران کے مختلف علاقوں میں کمی و بیشی کے ساتھ ٹارگٹ کلنگ اور بد امنی کے دیگر واقعات کا سلسلہ بھی جاری ہے (فائل فوٹو)

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع آواران میں فائرنگ کے دو مختلف واقعات میں ایک ریٹائرڈ ٹیچر اورمحکمہ تعلیم کا ایک افسر ہلاک ہوگئے۔

ریٹائرڈ ٹیچر کی ہلاکت کا واقعہ ضلع کے علاقے مشکے میں بدھ کے روز صبح کے وقت پیش آیا۔

آواران میں انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق نامعلوم مسلح افراد ایک گھر میں داخل ہوئے اور فائرنگ کی۔فائرنگ کے نتیجے میں ایک شخص ہلاک اور دوسرا زخمی ہوا۔

ذرائع کے مطابق ہلاک ہونے والا شخص ایک ریٹائرڈ ٹیچر تھا جن کی شناخت رحمت اللہ کے نام سے ہوئی۔

اس واقعے سے دس گھنٹے قبل نامعلوم مسلح افراد نے ضلع کے علاقے نوکجو میں ڈپٹی ایجوکیشن آفیسر محمد سلیم شاہوانی کے گھر میں داخل ہوکر فائرنگ کی۔ فائرنگ کے نتیجے میں محمد سلیم شاہوانی ہلاک ہوئے۔

دونوں واقعات کا مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردی گئی ہیں لیکن تاحال ان واقعات کے محرکات معلوم نہیں ہوسکے۔

ضلع آواران کا شمار بلوچستان کے ان علاقوں میں ہوتا ہے جو کہ شورش سے زیادہ متاثر ہیں۔ اس ضلع میں طویل عرصے سے سکیورٹی فورسز کا سرچ آپریشن جاری ہے۔

آواران میں جہاں سکیورٹی فورسز پر حملوں کا سلسلہ جاری ہے وہاں اس ضلع کے مختلف علاقوں میں کمی و بیشی کے ساتھ ٹارگٹ کلنگ اور بد امنی کے دیگر واقعات کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

تاہم سرکاری حکام کا یہ کہنا ہے کہ آواران سمیت بلوچستان کے دیگر علاقوں میں اب صورتحال میں بہتری آئی ہے۔

اسی بارے میں