خیبر ایجنسی سے تین افراد کی لاشیں برآمد

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستان کے قبائلی علاقے خیبر ایجنسی میں جمرود کے علاقے سے تین افراد کی لاشیں ملی ہیں جن کی تاحال شناخت نہیں ہو سکی ہے۔

پولیٹکل انتظامیہ کے اہلکاروں نے بتایا کہ تینوں افراد کی لاشیں جمرود ہسپتال پہنچا دی گئی ہیں۔

یہ لاشیں جمرود میں پشاور کی سرحد کے قریب شاکس کے علاقے سے ملیں۔

٭ نوشہرہ میں پیش امام سمیت تین افراد کی لاشیں برآمد

* لکی مروت میں چار افراد کی لاشیں برآمد

اہلکاروں نے بتایا کہ انتظامیہ ان لاشوں کی شناخت کی کوشش کر رہی ہے۔

مقامی ذرائع نے بتایا کہ ہلاک ہونے والوں کی عمریں 25 سے 30 سال کے درمیان ہیں اور ان میں سے دو کے جسموں پر گولیوں کے علاوہ تشدد کے بھی نشانات ہیں جب تیسرے کو گولی مار کر ہلاک کیا گیا۔

پولیٹکل انتظامیہ کے اہلکار نے بتایا کہ اب تک یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ ان تینوں افراد کو کس نے مارا ہے اور یہ لاشیں یہاں لائی گئی ہیں یا انھیں اسی جگہ پر قتل کیا گیا ہے۔

خیبر پختونخوا کے ضلع نوشہرہ کے قریب جمعرات کو بھی تین افراد کی لاشیں ملی تھیں جنھیں گولیاں مار کر ہلاک کیا گیا تھا۔ ان میں سے ایک امام مسجد بتائے گئے تھے۔

پشاور کے پھندو روڈ پر چند روز پہلے ایک امام مسجد کو ان کے بیٹے سمیت فائرنگ ککے ہلاک کر دیا گیا تھا۔

امام مسجد کا تعلق نوشہرہ کے قریبی علاقے اکوڑہ خٹک سے بتایا گیا تھا۔

اسی بارے میں