بلوچستان: دولتِ اسلامیہ کے کمانڈر سمیت چھ افراد گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں حکام نے شدت پسند تنظیم القاعدہ اور دولت اسلامیہ سے وابستہ کے ایک مقامی کمانڈر سمیت چھ افراد کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

کوئٹہ میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بلوچستان کے وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی نے بتایا کہ ان افراد کو سکیورٹی فورسز نے نوشکی کے علاقے سے گرفتار کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ گرفتار افراد میں شدت پسند تنظیم القاعدہ اور دولتِ اسلامیہ سے وابستہ ایک مقامی کمانڈر بھی شامل ہے۔

وزیر داخلہ نے گرفتار افراد کے نام نہیں بتائے تاہم ان کا کہنا تھا کہ ’مقامی کمانڈر 2012 اور 2013 میں القاعدہ اور دولتِ اسلامیہ میں شمولیت اختیار کی، ابتدائی تربیت افغانستان سے حاصل کی اور شام میں بھی جہادی سرگرمیوں میں حصہ لیا۔‘

ان کا کہنا تھا کہ وہ کچھ عرصہ بیشترً واپس آیا تھا اور نوشکی میں لوگوں کی برین واشنگ میں مصروف تھا۔ وزیر داخلہ نے بتایا کہ گرفتار افراد سے اسلحہ اور جہادی لٹریچر بھی برآمد ہوا ہے۔

میر سرفراز بگٹی کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں یہ القاعدہ سے تعلق رکھنے والا دوسرا نیٹ ورک ہے جس کو پکڑا گیا۔

انھوں نے بتایا کہ یہ حکومت کا عزم ہے کہ دہشت گردی کرنے والے کسی بھی گروہ کو بلوچستان میں نہیں پنپنے نہیں دیا جائے گا۔

اسی بارے میں