دیر لوئر: ضلعی کونسلر پر حملے میں تین افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption کچھ عرصہ قبل بھی ضلعی کونسلر شاد نواز خان پر حملہ کرنے کےلیے ایک بم نصب کیا گیا تھا تاہم اسے ناکارہ بنادیا گیا تھا

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کے ضلع دیر پائین میں حکام کا کہنا ہے کہ ڈسٹرکٹ کونسلر پر ہونے والے قاتلانہ حملے میں دو پولیس اہلکاروں سمیت تین افراد ہلاک اور دو زخمی ہوگئے ہیں۔

پولیس کے مطابق یہ واقعہ پیر کو دیر کے علاقے رباط بازار میں خال پولیس سٹیشن کی حدود میں پیش آیا۔

خال پولیس سٹیشن کے ڈی ایس پی ہدایت اللہ شاہ نے بی بی سی کو بتایا کہ جماعت اسلامی سے تعلق رکھنے والے رباط یونین کونسل کے ضلعی کونسلر شاد نواز خان بازار میں موجود تھے کہ نامعلوم مسلح افراد نے ان پر فائرنگ کردی۔

حملے میں شاد نواز خان کے بھائی اور دو پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے تاہم حملے میں ضلعی کونسلر محفوظ رہے۔

ڈی ایس پی ہدایت اللہ شاہ کے مطابق پولیس نے ایک حملہ آور کو گرفتار کرلیا ہے تاہم اس کی شناخت ظاہر نہیں کی جا رہی۔

مقامی صحافیوں کا کہنا ہے کہ پولیس اہلکار ضلعی کونسلر سے بازار میں کھڑے ہوکر کسی مسئلے پر بات کررہے تھے کہ اس دوران ان پر حملہ کیا گیا۔

پولیس اس بات کی تحقیقات کر رہی ہے کہ حملہ کا نشانہ کونسلر تھے یا پولیس اہلکار۔

کچھ عرصہ قبل بھی ضلعی کونسلر شاد نواز خان پر حملہ کرنے کے لیے ایک بم نصب کیا گیا تھا تاہم اسے ناکارہ بنادیا گیا تھا۔

حالیہ حملے کی وجہ فوری طور پر معلوم نہیں ہوسکی اور نہ ہی کسی تنظیم نے تاحال اس کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

اسی بارے میں