شکارپور میں امام بارگاہ پر خودکش حملے کی کوشش ناکام

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

پاکستان کے صوبۂ سندھ کے ضلع شکار پور کی پولیس نے عید الاضحیٰ کی نماز کے دوران امام بارگاہ پر خودکش حملے کی کوشش کو ناکام بنا دیا ہے۔

٭پولیس موبائل کے قریب حملے میں پانچ اہلکار زخمی

سرکاری میڈیا نے آئی جی سندھ کے حوالے سے بتایا ہے کہ دو خودکش بمباروں نے شکار پور کی تحصیل خان پور کی امام بارگاہ میں داخلے کی کوشش کی۔ اس دوران انھیں وہاں تعینات پولیس اہلکاروں نے روکا جس کے نتیجے میں ایک خودکش حملہ آور نے خود کو دھماکہ خیز مواد سے اڑا لیا۔

دھماکے کے نتیجے میں تین پولیس اہلکاروں سمیت 10 افراد زخمی ہو گئے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ امام بارگاہ کے باہر ہونے والے خودکش حملے میں ایک حملہ آور ہلاک ہوگیا۔

مقامی میڈیا کے مطابق دوسرے خودکش حملہ آور کو زخمی حالت میں گرفتار کر لیا گیا ہے۔

خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق سینئر پولیس افسر عمر طفیل نے بتایا ہے کہ زخمی ہونے والے پولیس اہلکاروں میں سے ایک کی حالت تشویش ناک ہے۔

انھوں نے بتایا کہ ’ڈاکٹر زخمی ہونے والے دوسرے مبینہ خودکش حملہ آور کی جان بچانے کی کوشش کر رہے ہیں، جو اس وقت زخمی ہوئے جبکہ پہلے خودکش حملہ آور نے خود کو اڑانے کی کوشش کی تاہم ناکام رہے۔‘

خیال ہے کہ شکار پور کراچی کے شمال میں 470 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے اور اسی ضلع میں گذشتہ برس شیعہ فرقے سے تعلق رکھنے والے مسلمانوں کی ایک مسجد کو نشانہ بنایا گیا تھا جس کے نتیجے میں 61 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں