شکار پور: مبینہ خودکش حملہ آور ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ضلع شکار پور میں ہی ڈیڑھ برس قبل امابارگاہ پر حملے میں 609 سے زاید افراد زخمی ہوئے تھے

صوبہ سندھ کے ضلع شکارپور کی انسداد دہشت گردی کی عدالت نے عید کی نماز کے دوران امام بارگاہ پر حملہ کرنے کی کوشش کرنے والے مبینہ حملہ آور کو 30 دن کے لیے ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں دے دیا ہے۔

٭ شکار پور امام بارگاہ پر خودکش حملے کی ناکام کوشش

رابطہ کرنے پر ضلع شکار پور کے پولیس حکام نے بی بی سی کو تصدیق کی کہ گرفتار ملزم کو 30 روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کیا گیا۔

ڈی ایس پی دین محمد نے بتایا کہ مقدمے کی تفتیش صوبائی محکمہ برائے انسداد دہشتگردی کے حوالے کر دی گئی ہے اور محکمے کے سربراہ راجہ عمر خطاب ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ عمر خطاب نے شکار پور کا دورہ کیا اور توقع ہے کہ وہ ملزم کو کراچی منتل کیا جائے گا۔

سندھ سے صحافی علی حسن کے مطابق جمعرات کو پولس نے دہشت گردی کے ناکام حملے کے زیر حراست ملزم عثمان کو سخت حفاظتی انتظامات میں عدالت میں پیش کیا۔ عدالت نے ملزم کو تیس روز کے لئے پولس کی تحویل میں دے دیا۔

’ملزم عثمان کو بکتر بند گاڑی میں لایا گیا تھا،اس کے ہاتھوں میں ہٹھکڑی لگی ہوئی تھی جب کہ پاؤں میں زنجیر بندھی ہوئی تھی، جس گاڑی میں وہ لایا گیا تھا اس کے پیچھے پولس والے موٹر سائیکلوں پر بھی سوار تھے۔ عدالت کے اطراف میں بھی مسلح پولس والے موجود تھے اور احاطہ عدالت میں بھی پولس موجود تھی۔‘

خیال رہے کہ نوجوان ملزم عثمان کو عید کے روز خان پور کی اما م بار گاہ سے فرار ہوتے ہوئے لوگوں نے پکڑا تھا۔ عثمان اپنے ایک اور ساتھی عبدالرحمان کے ہمراہ خود کش حملہ کرنے کے لئے آیا تھا۔

دونوں ملزمان امام بار گاہ میں داخل ہو چکے تھے تاہم وہاں موجود سکیورٹی اہلکاروں کی پوچھ گچھ کے دوران فرار ہونے کی کوشش میں اس کا ساتھی اپنے ہی ہاتھ میں موجود بم پھٹنے سے موقع پر ہی ہلاک ہو گیا تھا۔ جس کے نتیجے میں ایک پولس سپاہی شدید زخمی ہو گیا تھا۔

ناکام خود کش حملہ کے بعد حکام نے چالیس سے زائد افراد کو پوچھ گچھ کے لئے حراست میں لیا ہے جب کہ پولس کے ایک اہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ ناکام خود کش حملہ کے اہم ملزم سے تفتیش جاری ہے لیکن اس سے ابھی تک کار آمد معلومات حاصل نہیں ہوئی ہیں ۔

ڈ یڑھ سال قبل جنوری 2015 میں بھی شکار پور کی ایک امام بارگاہ میں ہونے والے بم دھماکہ کے نتیجے میں 61 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں