اسلام آباد میں ساتویں قومی امن میلے کا آغاز

تصویر کے کاپی رائٹ Facebook
Image caption ساتواں قومی امن میلہ 30 ستمبر تک جاری رہے گا

اسلام آباد میں بدھ کو نوجوانوں کے ساتویں قومی امن میلے کا آغاز ہوا جس میں ملک کے چاروں صوبوں، گلگت بلتستان، فاٹا اور کشمیر سے تعلق رکھنے وال سینکڑوں نوجوان لڑکوں اور لڑکیوں نے شرکت کی۔

اس میلے کا مقصد امن بحال کرنے میں نوجوانوں کے کردار کے بارے میں آگاہی فراہم کرنا ہے۔

٭ فاٹا میں پہلا یوتھ فیسٹیول، راحیل شریف کا افتتاح

میلے میں نیشنل ایکشن پلان، ترقی کا ہدف اور ویژن 2025، مذاہب کے درمیان ہم آہنگی اور نفرت انگیز بیانات کی روک تھام سمیت کشمیر پر الگ الگ اجلاسوں میں بحث ہو گی۔

میلے کے ایک منتظم محمد شہزاد خان نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ان اجلاسوں میں نوجوانوں کو درپیش چیلنجوں پر بات کی جائے گی۔

اس میلے کی منتظم اور چنان ڈیویلپمنٹ کی جنرل سیکریٹری نتاشا انور نے بی بی سی کو بتایا کہ اس میں نوجوانوں کو درپیش مسائل کے حل پر بھی بات ہو گی جس کے لیے کانفرنس کے ہر اجلاس میں سوال و جوابات کے علیحدہ حصے رکھے جائیں گے۔

نتاشا کے مطابق کانفرنس میں اس پر بھی بات ہوگی کہ یہاں سے واپس جانے کے بعد یہ نوجوان اپنے علاقوں میں امن کی بحالی کے لیے کیا کردار ادا کر سکتے ہیں۔

اس میلے میں سوات سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان کلیم اللہ نے بتایا کہ وہ میلے میں ملک بھر کے نوجوانوں سے امن کے فروغ کے بارے میں سیکھنے کی کوشش کریں گے۔

میلے کے پہلے روز وزیرِ مملکت برائے تعلیم اور پیشہ ورانہ ترقی بلیغ الرحمان، نیپال کے رکنِ پارلیمان ایکنیٹا اور سینیٹر روبینہ خورشید نے شرکت کی۔

ساتواں قومی امن میلہ 30 ستمبر تک جاری رہے گا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں