BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Thursday, 25 December, 2003, 18:03 GMT 23:03 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
’حملہ گمراہ لوگوں نے کروایا ہے‘
جنرل مشرف

پاکستان کے صدر جنرل پرویز مشرف نے خودکش حملے کے بعد پاکستان ٹیلی ویژن کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ ان کے اوپر ہونے والا حملہ گمراہ لوگوں نے کیا ہے۔

حملے کی تفصیل بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ’میں کامسٹیک کی میٹنگ سے واپس گھر جا رہا تھا تو اس جگہ کے نزدیک جہاں پہلے مجھ پر قاتلانہ حملہ ہو چکا ہے دو پیٹرول پمپ موجود ہیں۔ پہلے ایک پیٹرول پمپ کے نزدیک سے ایک خودکش بمبار کی گاڑی آئی۔ اس کے حملے میں میں بچ گیا لیکن جب ہم نے تیزی سے آگے نکلنے کی کوشش کی تو دوسرے پیٹرول پمپ سے دوسرے نے حملہ کیا۔ ہمارے اوپر بہت کچھ گرا لیکن الحمداللہ ہمیں کچھ نہیں ہوا اور ہم بچ کر آگے نکل گئے‘۔

جنرل مشرف نے کہا کہ انہیں افسوس ہے کہ اس حملے میں چودہ افراد ہلاک اور تیس سے زائد زخمی ہوئے۔

’مجھے ان کے جاں بحق ہونے پر بہت رنج ہے۔ میں ان کے تمام عزیزوں سے افسوس کرتا ہوں۔ کیونکہ یہ میری وجہ سے ہوا ہے اس لیئے میں وعدہ کرتا ہوں کہ میں ان کے خاندانوں کا خیال رکھوں گا۔‘

صدر مشرف اور صدر بش
جارج بش سے دوستی مہنگی پڑ رہی ہے
 

اس سوال کے جواب پر کہ ان حملوں کے پیچھے کون لوگ ملوث ہو سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ یقین سے نہیں کہہ سکتے لیکن ظاہر ہے کہ یہ دہشت گرد اور انتہا پسند ہیں۔

’یہ گمراہ لوگ ہیں اور اسلام اور امہ کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔ مگر مجھے اللہ پر بھروسہ ہے اور ان واقعات سے میرے ارادے مزید پختہ ہوئے ہیں۔‘

جنرل مشرف نے اپنی سیکیورٹی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ وہ جلد بازی میں کوئی ایکشن نہیں لینا چاہتے۔

’خودکش بمبار کو چیک کرنا کوئی آسان کام نہیں ہے۔ یہ موبائل بم ہیں۔ جہاں آپ جا رہے ہیں وہاں پانچ منٹ میں گاڑی چلا کر آپ کے سامنے آ گئے۔ اسلیئے مجھے پورا یقین ہے کہ میرے ارد گرد لوگ جان پر کھیل کر میری حفاظت کرتے ہیں۔ میں ان سے مطمئن ہوں۔

’سارک کانفرنس کے حوالے سے میں کہنا چاہتا ہوں کہ یہ ایک ٹارگٹ بمباری تھی۔ میں ٹارگٹ تھا اس لئے میرے ارد گرد جو لوگ ہیں صرف خطرہ انہیں ہی ہوگا، دوسروں کو نہیں۔ اس لئے جو لوگ ادھر آئیں گے انہیں ڈرنے کی ضروت نہیں۔‘

’ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ کر رہے ہیں اور کرتے رہیں گے، اس لئے ان کا سامنا کرنا پڑے گا۔ یہ بزدل لوگ ہیں، چھپ کر وار کرنے والے لوگ ہیں۔‘

 
 
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد