BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Wednesday, 03 March, 2004, 06:57 GMT 11:57 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
بھگدڑمیں 5 بچے 8 عورتیں ہلاک
 
ماضی میں بھی ایسے واقعات ہوئے ہیں
فائل فوٹو
پاکستان کے قبائلی علاقے پارا چنار کے ایک امام بار گاہ میں بھگدڑ کے نتیجے میں کم از کم تیرہ شیعہ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ ڈاکٹروں کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں آٹھ عورتیں اور پانچ بچے شامل ہیں۔

امام بارگاہ کے منتظم نوروز خان نے بی بی سی اردو سروس کو بتایا کہ بھگدڑ بجلی کے نظام میں خرابی کی وجہ سے اس وقت مچی جب سینکڑوں عورتیں اور بچے عاشورہ کے سلسلے میں امام بارگاہ میں جمع تھے۔

’رات کے وقت بجلی کے بورڈ میں شارٹ سرکٹ کی وجہ سے آگ لگ گئی اور بجلی چلی گئی۔ امام بارگاہ میں موجود عورتیں بوکھلا کے امام بارگاہ سے باہر بھاگیں، جس کے نتیجے بھگ دڑ مچ گئی اور نو عورتوں اور دو بچوں سمیت تیرہ افراد ہلاک ہوگئے۔‘

ڈاکٹر امجد حسین کا کہنا ہے کہ اس بھگدڑ میں چھپن افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا کہ بجلی کا نظام معطل ہونے سے امام بارگاہ میں موجود خواتین خوفزدہ ہوگئیں کیونکہ ان کا خیال تھا کہ یہ کوئی بیرونی حملہ ہے۔ اسی خدشے کے تحت دو منزلہ عمارت سے باہر نکلنے کی کوشش میں عمارت کا زینہ ٹوٹ گیا اور زبردست بھگدڑ مچ گئی۔

حادثے کے وقت امام بارگاہ میں پندرہ سو عورتیں موجود تھیں۔

 
 
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد