BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Tuesday, 17 January, 2006, 20:02 GMT 01:02 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
قوم پرستوں کو بھاشا بھی نامنظور
 

 
 
نثار کھوڑو
پیپلز پارٹی سندھ بھی اس مسئلے پر قوم پرستوں کے ساتھ ہے
سندھ کے قوم پرست رہنماؤں نے صدر پرویز مشرف کے اعلان کردہ بھاشا ڈیم کی تعمیر کو بھی مسترد کردیا ہے اور جدو جہد جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

سندھ کی سیاسی اور قوم پرست جماعتیں جو متازعہ کالاباغ ڈیم کے خلاف مسلسل احتجاج کرہی ہیں، انہوں نے صدر جنرل مشرف کے حالیہ اعلان پر شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے۔

سندھ اسمبلی میں اپوزیشن رہنما نثار کھوڑو کا کہنا ہے کہ ’آئین کے مطابق صدر مشرف کو کوئی حق نہیں پہنچتا کہ وہ ڈیم کا اعلان کریں۔ کابینہ نے مشترکہ مفادات کی کونسل بنانے کی بات کی تھی۔ کیا اس سے قبل ہی ڈیم کی منظوری دے دی گئی ہے؟ اس کا جنرل کو کوئی اختیار نہیں ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ ’ہم ایسے کسی منصوبے کو تسلیم نہیں کرینگے جس میں عوام کی رائے شامل نہیں ہوگی۔انہوں نے کہا کہ یہ ایک فرد واحد کا فیصلہ ہے‘۔

پاکستان کی چھوٹی قوموں کے اتحاد پونم سندھ کے چیئرمین اور سندھ ترقی پسند پارٹی کے سربراہ ڈاکٹر قادر مگسی نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’ہم مشرف اور اس کے کسی فیصلے کو نہیں مانتے، پہلے یہ طے کیا جائے کہ دریائے سندھ پر کس کا بنیادی حق ہے اور اس میں سے سندھ کا کتنا حصہ بنتا ہے؟‘

قادر مگسی کے مطابق پونم کو دریائے سندھ پرکوئی بھی ڈیم قبول نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’کالاباغ ڈیم پر صدر مشرف نے جس جارحانہ رویہ کا اظہار کیا تھا اس پرشکست کے بعد انہو ں نے منہ چھپانے (فیس سیونگ ) کے لیے بھاشا اور منڈا ڈیم بنانے کا اعلان کیا ہے۔ یہ در اصل ان کی نفسیاتی شکست ہے‘۔

ڈاکٹر قادر مگسی کے مطابق کالا باغ ڈیم پر جو مظلوم قوموں میں یکجہتی تھی اس کو کمزور کرنے کے لیے بھاشا ڈیم کا اعلان کیاگیا ہے تاکہ مشترکہ موقف کمزور ہوسکے۔ ان کے مطابق یہ جنرل مشرف کا نفیساتی حربہ ہے مگر وہ اپنی جدو جہد جاری رکھیں گے۔

حال ہی میں تشکیل پانے والے سندھ قومی اتحاد کے رہنما اور جیئے سندھ قومی محاذ کے سربراہ بشیر قریشی کا کہنا ہے کہ وہ سندھو دریا پر کوئی ڈیم قبول نہیں کرینگے کیونکہ ان سب پر پنجاب کی اجارہ داری ہوگی اور وہ پانی روکے گا۔

انہوں نے کہا کہ ’سندھ کو صدر مشرف کی کسی بھی یقین دہانی پر یقین نہیں ہے۔ مشرف خود کہ چکے ہیں کہ پنجاب کے پاس طاقت ہے اس لیے سندھ کوبھاشا یا منڈا ڈیم بھی منظور نہیں ہے‘۔

کالا باغ کی سائٹ
کالا باغ گزشتہ تیس سال سے ایک متنازعہ ڈیم بنا ہوا ہے

کالاباغ ڈیم ایکشن کمیٹی کے رہنما اور عوامی تحریک کے سربراہ رسول بخش پلیجو نے کہا کہ ’صدر مشرف کی تقریر تاریخ کی گمراہ کن تقریر تھی، جس میں انہوں نے یک طرفہ غلط اعداد و شمار پیش کیے ہیں اور آبی وسائل کے بارے میں رپورٹ بھی غلط ہے‘۔

ان کے مطابق ’صدر مشرف سندھ کو ملنے والا دو گھونٹ پانی بھی چھیننا چاہتا ہے۔ منگلا پر سندھ بھی حصہ ہے مگر اس پر قبضہ کیاگیا ہے‘۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ’صدر مشرف صرف دریائے سندھ پر ڈیم بنانے کی بات کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ جہلم اور چناب پر ڈیم نہیں بن سکتا۔ پہلے چناب پر روہتاس ڈیم بنانے کی بات کی جاتی تھی اب پنجاب کے کہنے پر اس بات کو چھپایا جارہا ہے‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’یہ سندھی لوگوں کو بیوقوف سمجھتے ہیں۔ ہم اس مسئلے پر ساتھیوں سے مشورہ کرینگے‘۔

سندھ نیشنل پارٹی کے چیئرمین امیر بخش بھنبھرو نے کہا کہ ’کوئی بھی ڈیم عوام کی رائے کےبغیر نہ بنایا جائے۔ سندھ کا موقف ہے کہ پہلے سندھ سے ماضی میں ہونے والی نا انصافیوں کا حساب دیا جائے اس کےبعد ہی کوئی بات سنیں گے۔ہم مسلسل احتجاج کر رہے ہیں، ایک ایشو پر احتجاج نہیں ہے‘۔

ادھر حکومت سندھ بھی کالا باغ ڈیم کی مخالفت کر رہی تھی۔ تاہم صدر جنرل مشرف کے حالیہ اعلان کا حکومت سندھ نے خیر مقدم کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ سندھ ارباب غلام رحیم کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں اس اعلان کو ملک کے بہتر مفاد میں فیصلہ قرار دیا گیا ہے اور صدر کا شکریہ ادا کیا گیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ صدر مشرف کے اس اعلان کے بعد ان ملک دشمن قوتوں کے عزائم خاک میں مل جائیں گے جو اس ایشو کو بنیاد بنا کر ملک میں افراتفری پھیلانا چاہتی تھیں۔

واضح رہے کہ صدر مشرف نے بھاشا ڈیم کا اعلان کالاباغ ڈیم کے خلاف جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے احتجاج سے ایک دن قبل کیا ہے۔ یہ احتجاج بدھ کے روز حیدرآباد میں کیا جانا ہے۔ تین ہفتے قبل کراچی ہونے والے احتجاج کے بعد یہ دوسرا بڑا احتجاج ہے جس میں تمام پارٹیوں کے کارکنان سندھ بھر سے شرکت کرنے والے ہیں۔

 
 
مشرف’سر آپ کی مرضی‘
کالا باغ تو بنے گا آگے کی بات کریں: مشرف
 
 
جام محمد یوسفبلوچستان بٹ گیا
بلوچستان کالا باغ ڈیم کی تعمیر پر بٹ گیا
 
 
کالا باغ ڈیمفوجی جرنیلوں کا ڈیم
کالا باغ ڈیم: سیاسی مخالفت روکنے کا ذریعہ
 
 
 کالا باغ ڈیم سندھ اورکالا باغ ڈیم
ورلڈ بنک سے بڑی ڈیموں کی فنڈنگ کیوں؟
 
 
اسی بارے میں
زلزلہ: سردی سے 18 بچے ہلاک
05 January, 2006 | پاکستان
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد