BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Thursday, 08 February, 2007, 16:43 GMT 21:43 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
پاکستان: ’انصاف کے دروازے بند‘
 

 
 
عاصمہ، آئی اے رحمان اور رپورٹ
حکومت کے کان اور آنکھیں تو بند ہی تھے، اب وہ ہاتھ اور پاؤں سے بھی معذور ہوچکی ہے
انسانی حقوق کی غیر سرکاری تنظیم ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان نے سال دو ہزار چھ کے حوالے سے جاری کی گئی اپنی رپورٹ میں اس بات پر تشویش کا اظہار کیا ہے کہ ملک میں حصول انصاف کے دروازے بند ہوتے جا رہے ہیں۔

کمیشن کی سربراہ عاصمہ جہانگیر نے دارالحکومت اسلام آباد میں جمعرات کو ایک اخباری کانفرنس کے ذریعے گزشتہ سال پاکستان میں انسانی حقوق کی صورتحال پر اپنے ادارے کی رپورٹ جاری کی۔

ان کا کہنا تھا ’تشویشناک بات یہ ہے کہ ملک میں حصول انصاف کا کوئی طریقہ کار رہا ہی نہیں اور اب انسانی حقوق کی خلاف ورزی کی نشاندہی کی بھی جاتی تو انصاف کے تمام دراوزے بند ملتے ہیں‘۔

انہوں نے مزید کہا ’حکومت کے کان اور آنکھیں تو بند ہی تھے، اب وہ ہاتھ اور پاؤں سے بھی معذور ہوچکی ہے۔ پچھلے سال انسانی حقوق کے حوالے سے بہت ہی بے بسی کا سامنا رہا‘۔

انسانی حقوق کمیشن کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سال دوہزار چھ میں عورتوں کے خلاف جرائم میں کوئی کمی نہیں ہوئی بلکہ ان اعضا کاٹنے ، چہرے بگاڑنے اور اجتماعی جنسی تشدد کے واقعات میں اضافہ ہوا۔ رپورٹ کے مطابق اٹھارہ سو کے قریب افراد نے سماجی اور معاشی محرومیوں سے تنگ آ کر خودکشی کی اور ملک میں گروی مزدوروں (بانڈڈ لیبر) کی تعداد سترہ لاکھ رہی۔

اخباری کانفرنس سے کمیشن کے اقبال حیدر اور آئی اے رحمان نے بھی خطاب کیا۔ اقبال حیدر نے ملک سے ’باوردی صدارت‘ کے خاتمہ کامطالبہ کیا اور کہا کہ ان کی موجودگی میں منصفانہ الیکشن ہونے کا امکان نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ قبل از انتخابات دھاندلی کا آغاز ہو چکا ہے۔

عاصمہ جہانگیرنے اس تاثر کی نفی کی کہ پاکستان سے لاپتہ ہونے والے افراد کا دہشت گردی کے خلاف جنگ سے کوئی تعلق ہے اور کہا کہ

لاپتہ افراد
 لاپتہ ہونے والے بیشتر افراد یا تو سندھی اور بلوچ قوم پرست ہیں یا وہ لوگ ہیں جن پر صدر مشرف پرحملے کا شبہ ہے
 
عاصمہ جہانگیر
لاپتہ ہونے والے بیشتر افراد یا تو سندھی اور بلوچ قوم پرست ہیں یا وہ لوگ ہیں جن پر صدر مشرف پرحملے کا شبہ ہے۔

انہوں کہا کہ سال دوہزار چھ پراسرار طور پر لاپتہ ہوجانے والے افراد کے حوالے سے بھی خاص رہا۔ انہوں نے کہا کہ لاپتہ ہونے والے افراد کے بارے میں حکومت نے کوئی جواب نہیں دیا اور ان پراسرار گمشدگیوں پر احتجاج کرنے والوں کو مزید سزا دی گئی یا تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

انسانی حقوق کمیشن کی سربراہ کا کہنا تھا کہ اگر کوئی رہا ہوا بھی ہے تو سپریم کورٹ کے حکم پر نہیں بلکہ پکڑنے والوں نے اپنی طرف سے مہربانی کا مظاہرہ کیا۔

انہوں نے سوال اٹھایا کہ لوگوں کو غیر قانونی طور پر حراست میں رکھنے والے افراد یا اداروں کے خلاف کوئی کاروائی کیوں نہیں کی جاتی؟

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ سال ذرائع ابلاغ سے تعلق رکھنے والے چار افراد کو قتل کیا گیا، بلوچی اور سندھی تنظیموں کی اڑتیس ویب سائٹس پر پابندی لگائی گئی اور دو ٹیلی ویژن اور ایک ریڈیو چینل بند کیے گئے۔ پنجاب کے وزیر اعلی نے ایک ٹیلی ویژن کی نشریات کئی روز تک بند کر کے اسے سزا دی۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے نتیجےمیں ایک سو دس افراد ہلاک ہوئے۔ اختلاف رائے کا اظہار کرنے والوں کو کچلنے کے لیے بلوچستان اور ملک کے دیگر حصوں میں ظالمانہ کارروائیاں کی گئیں۔ان کا کہنا تھا ’بلوچستان اور وزیرستان میں کارروائیوں کے عوام پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔

عاصمہ جہانگیر نے کہا کہ ساڑھے آٹھ ہزار پاکستانی دوسرے ملکوں کی جیلوں میں قید ہیں، جن میں سے ساڑھے پانچ ہزار صرف سعودی عرب کی جیلوں میں ہیں۔ انسانی حقوق کمیشن نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے ان قیدیوں کی رہائی کے لیے کوشش کی جائے۔

 
 
خاتونسیاسی مصلحت
عورتوں کے حقوق میں رکاوٹ، ملا ملٹری اتحاد
 
 
یہ بھی پاکستان ہے
اوسطاً روزانہ اکیس افراد کی خود کشی
 
 
ہیومن رائٹس رپورٹ
’آزاد‘ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں
 
 
حکومتی ردِ عمل
ہیومن رائٹس واچ کی رپورٹ جانبدارانہ ہے
 
 
ہیومن رائٹس واچ
کشمیر انتخابات، الحاق مخالفوں کی عدم شرکت
 
 
اسی بارے میں
حقوق نسواں بل میں ترمیم
15 November, 2006 | پاکستان
’بش مشرف پر دباؤ ڈالیں‘
25 February, 2006 | پاکستان
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد