BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Sunday, 11 March, 2007, 02:48 GMT 07:48 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
’وہ نظر بند نہیں‘ عظیم طارق
 
معطل چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری
پاکستان کے وزیر مملکت برائے اطلاعات طارق عظیم نے کہا ہے کہ ’وہ (چیف جسٹس) نظر بند نہیں ہیں۔ نہ ہی حکومت نے انہیں نظر بند کیا ہے۔ اب وہ لوگوں سے کیوں نہیں مل رہے ہیں تو اس کا جواب تو وہ خود ہی دے سکتے ہیں‘۔

پاکستان کے صدر جنرل پرویز مشرف کی جانب سے اختیارات کے مبینہ ناجائز استعمال کے الزام کے حوالے سپریم کورٹ کے چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کو معطل کرنے اور ان کے خلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر کرنے کے سلسلے میں بی بی سی اردو سے بات کرتے ہوئے اس بات کی تردید کی کہ حکومت کی جانب سے کسی کو چیف جسٹس سے ملاقات کرنے سے روکا گیا ہے۔


ان کا کہنا تھا کہ ’اس معاملے میں اس وقت بہت میڈیا انٹرسٹ ہے، سب لوگ ملنا چاہتے ہیں۔میری ایطلاع کے مطابق ایک سابق اور موجودہ جج نے ان سے رابطہ کیا اور ان کی ان سے بات بھی ہوئی۔ دوسرے لوگ بھی جو ان سے ملنا چاہتے ہیں، ان سے اپائنٹمنٹ لے کر یا ان سے رابطہ کر کے تو ان کی ملاقات ہو سکتی ہے لیکن اگر وہ خود کسی سے نہیں ملنا چاہتے تو ظاہر ہے ان کی خواہش کا احترام کیا جائے گا اور اگر کسی کو ان کے پاس جانے سے روکا گیا ہے تو ان کی خواہش پر ہی روکا گیا ہو گا‘۔

اس سوال کے جواب میں کہ سپریم کوٹ بار ایسوسی ایشن کے موجودہ صدر منیر حسین اور سابق صدر حامد خان ان سے ملنے گئے تھے لیکن انہیں پولیس اور انتظامیہ نے جانے ہی نہیں دیا؟ وزیر مملکت نے کہا پوچھا:

’کیا چیف جسلاس نے ان سے کہا تھا کہ وہ ان سے آ کر ملیں؟‘

اس بارے میں کہ ان کے بھانجے عامر رانا نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ ’ان پر پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے کہ وہ مستعفی ہو جائیں‘۔ تو ظاق عظیم نے کہا:

جسٹس افتخار کی سرکاری رہائشگاہ کو جانے والے راستے پر پولیس نے رکاوٹیں کھڑی کی ہوئی ہیں

’یہ تمام قیاس آرائیاں ہیں‘۔

انہوں نے پھر اس باتر پر اصرار کرتے ہوئے کہ حکومت کی جانب سے کوئی رکاوٹ نہیں ہے کہا کہ ’معاملہ اس وقت سپریم جوڈیشل کونس کےپاس ہے جو سپریم کورٹ کا درجہ رکھتی ہے۔ پاکستان کے پانچ سینئر ترین جج اس معاملے کو سن رہے ہیں اور تیرہ تاریخ مقرر کی گئی ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں ان ججوں پر اعتماد ہے اور سپریم جوڈیشل کونسل جس نتیجے پر پہنچے گی ہم اس کا احترام کریں گے۔

 
 
’اب کیا ہوگا‘
چیف جسٹس کی معطلی اور منو بھیل کی مایوسی
 
 
 جسٹس افتخارفیصلے کے محرکات
آخر جنرل مشرف نے ایسا کیوں کیا؟
 
 
جسٹس افتخارچیف جسٹس معطل
جسٹس افتخار کی جگہ جسٹس جاوید کا تقرر
 
 
ُچوہدری افتخارانصاف میں تاخیر
عدلیہ پر اعتماد میں کم ہوگا۔ چیف جسٹس
 
 
مسئلہ کس کو تھا؟
افتخار محمد چوہدری کے ریکارڈ پر ایک نظر
 
 
سجاد علی شاہسابق چیف جسٹس
’عدلیہ کی ساکھ کو بڑا دھچکا لگا ہے‘
 
 
اسی بارے میں
سپریم کورٹ کے نئے چیف جسٹس
31 December, 2003 | پاکستان
چیف جسٹس کا ’دماغی معائنہ‘
06 September, 2003 | پاکستان
20 ہزار روپے کے 18 سال
26 August, 2005 | پاکستان
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد