BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Thursday, 21 June, 2007, 13:32 GMT 18:32 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
’فتوٰی بدنامی کی وجہ نہیں‘
 

 
 
نیلوفر بختیار
نیلوفر بختیار نے بھی جو کچھ کیا وہ اسلام نے بالکل منافی ہے ۔
سابق وفاقی وزیر نیلوفر بختیار کی جانب سے قانونی نوٹس دیے جانے کے بعد لال مسجد کے خطیب مولانا عبدالعزیز کا کہنا ہے کہ سابق وزیر کی بدنامی لال مسجد کی جانب سے جاری فتوی کی وجہ سے نہیں ہوئی بلکہ اُن کے اپنے فعل کی وجہ سے پوری دنیا میں پاکستان کو شرمندگی اُٹھانا پڑی۔

مولانا عبدالعزیز کا کہنا تھا کہ لال مسجد اپنے فتوے پر قائم ہے۔ انہوں نے تصدیق کی کہ سابق وفاقی وزیر کی جانب سے اُنہیں قانونی نوٹس مل گیا ہے اور لال مسجد کے مفتی اس کا جائزہ لے رہے ہیں اور جلد ہی اس پر اپنا جواب دیں گے۔ مولانا عبدالعزیز کا کہنا تھا’جیسا کسی کا عمل ویسا ہوگا، ہم ویسا ہی جواب دیں گے‘۔

گزشتہ روز سابق وزیر نیلوفر بختیار نے لال مسجد کی جانب سے اُن کے خلاف دیے جانے والے فتوی کے جواب میں مسجد انتظامیہ کو قانونی نوٹس جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ مسجد انتظامیہ کی جانب سے اُن کی کردار کُشی کی گئی ہے۔ نوٹس میں مفتی یونس سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ اپنے اس غیر اسلامی اور غیر قانونی عمل پر معافی مانگیں جس کے نتیجے میں ایک باعزت مسلمان خاتون کے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔

مولانا عبدالعزیز نے نیلوفر بختیار کی جانب موصول ہونے والے قانونی نوٹس کے جواب میں کہا کہ اگر آئندہ بھی کوئی وزیر اس طرح کا کام کرے گا جیسا کہ نیلوفر بختیار نے کیا تو مسجد کی جانب سے ایسے ہی فتوے جاری ہوں گے۔

نیلوفر بختیار نے لال مسجد انتظامیہ کو قانونی نوٹس جاری کیا ہے

نیلوفر بختیار کی جانب سے اُٹھائے جانے والے اس نکتے کے جواب میں کہ اُنہوں نے سب کچھ زلزلہ متاثرین کی مدد کے لیے کیا، لال مسجد کے نائب مہتمم غازی عبدالرشید کا کہنا تھا کہ کسی اچھے مقصد کے لیے اگر غلط راستہ اپنایا جائے تو اُسے ٹھیک نہیں کہا جا سکتا۔ اور نیلوفر بختیار نے بھی جو کچھ کیا وہ اسلام نے بالکل منافی ہے ۔

یاد رہے کہ اس سال مارچ میں نیلوفر بختیار نے زلزلہ متاثرین کے لیے فنڈز جمع کرنے کی مہم کے سلسلے میں فرانس میں ایک طیارے سے پیراشوٹ کے ذریعے چھلانگ لگائی تھی اور کامیاب چھلانگ کے بعد اخبار میں شائع ہونے والی ایک تصویر میں انہیں ایک مرد سے بغلگیر ہوتے ہوئے دکھایا گیا تھا۔اس پر لال مسجد سے فتوی جاری کیا گیا کہ یہ فحش عمل ہے اور شدید تنقید کا نشانہ بنائے جانے کے علاوہ نیلوفر بختیار سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

 
 
اسی بارے میں
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد