BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Thursday, 03 April, 2008, 02:23 GMT 07:23 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
’معاف بھی کیا اور معافی بھی مانگی‘
 

 
 
سندھ میں مخلوط حکومت بننے کے امکانات روش ہو گئے ہیں

پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چئرمین آصف علی زرداری نے متحدہ قومی موومنٹ کے صدر دفتر نائن زیرو پر خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ تاریخ یاد رکھے گی کہ ملک کی سب سے بڑی پارٹی نے نائن زیرو پر آ کر معافی مانگی بھی اور معافی دی بھی۔

کراچی میں عزیر آباد کے علاقے میں متحدہ قومی موومنٹ کے دفتر پر آصف علی زرداری کے دورے کے دوران متحدہ قومی موومنٹ کے رہنما الطاف حسین نے بھی ٹیلی فون پر خطاب کیا اور اس طرح کے خیر سگالی کے جذبات کا اظہار کیا۔

الطاف حسین نے کہا کہ پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم نے ایک نئے سفر کا آغاز کیا اور انہوں نے پیپلز پارٹی کو معاف بھی کیا اور ان سے معافی بھی مانگی۔

آصف علی زرداری نے کہا کہ وہ نائن زیرو پر کھڑے ہو کر یہ کہنا چاہتے ہیں کہ اب اس ملکوں کے لوگوں کو لڑانے کی کوشش نہیں کی جانی چاہیئیں وہ آپس میں لڑنے کے لیے تیار نہیں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گڑھی خدا بخش کے شہداء کا بدلہ لڑ کر نہیں لیا جائے گا بلکہ نظام بدل کر لیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کوئی پبلک لمیٹڈ کمپنی نہیں کہ وہ بیٹھ گئی تو دوبارہ کھڑی نہیں ہوسکتی بلکہ قوموں پر برے وقت آتے ہیں اور وہ سرخرو ہوتیں ہیں۔

 نائن زیرو کے اطراف جا بجا بینرز نظر آرہے تھے جن پر ’ آصف الطاف بھائی بھائی سندھ میں خوشحالی آئی‘ اور ’خوش آمدید آصف زرداری‘ کے نعرے درج تھے
 

آصف علی زرداری اپنے رفقاء کے ساتھ گزشتہ شب دس بجے متحدہ قومی مومنٹ کے صدر دفتر نائن زیرو پر پہنچے لیکن وہاں ایم کیو ایم کے کارکن مرد اور خواتین کی بڑی تعداد پپلزپارٹی کی قیادت کا استقبال کرنے دوپہر سے ہی جمع ہونا شروع ہوگئی تھی۔

نائن زیرو کے اطراف جا بجا بینرز نظر آرہے تھے جن پر ’ آصف الطاف بھائی بھائی سندھ میں خوشحالی آئی‘ اور ’خوش آمدید آصف زرداری‘ کے نعرے درج تھے۔

آصف زرداری پہلے ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین کے بھائی اور بھتیجے کی قبروں پر فاتحہ خوانی کے لئے گئے اور جب نائن زیرو پہنچے تو ان کا والہانہ استقبال پھولوں کی پتیاں نچھاور کرکے کیا گیا۔

آصف زرداری کے ساتھ رحمٰن ملک، نبیل گبول، سید قائم علی شاہ، پیر مظہر الحق اور پی پی پی کےدیگر رہنما تھے جنہوں نے ایم کیو ایم کی قیادت جن میں ڈاکٹر فاروق ستار، بابر خان غوری، وسیم اختر اور انور عالم سے ملاقات کی۔

آصف زرداری کی ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین سے فون پر بات بھی ہوئی۔ بعد میں الطاف حسین نے لوگوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ماضی میں جو زیادتیں ہوئیں ان پر انہوں نے معافی بھی مانگی اور معاف بھی کیا۔

اب متحدہ کے رہنماء کل پپلزپارٹی کے بانی ذوالفقار علی بھٹو کی برسی میں شرکت کرنے گڑھی خدا بخش جائیں گے۔ کل حکومت سازی کے حوالے سے کوئی بات نہیں ہوئی لیکن اس مفاہمتی ملاقات کے بعد اب دونوں جماعتوں کے رہنماؤوں کے درمیان حکومت سازی کے حوالے سے بھی بات چیت ہوگی اور اس بات کا امکان روشن ہو گیا ہے کہ سندھ میں پپلزپارٹی، ایم کیو ایم کے ساتھ مخلوط حکومت بنائی گی۔

 
 
اسی بارے میں
وزارتوں کا اعلان سنیچر کو؟
26 March, 2008 | پاکستان
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد