BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
آر ایس ایس کیا ہے
آر ایس ایس کیا ہے
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Friday, 05 December, 2008, 14:25 GMT 19:25 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
فرید کوٹ میں غیر معمولی کیا؟
 

 
 
گرفتار ہونے والے مبینہ حملہ آور عظیم امیر قصاب ممبئی میں زیر علاج ہے
ممبئی میں ہونے والے دہشت گرد حملوں کے بعد سے بھارتی ذرائع ابلاغ میں تواتر سے یہ الزام لگایا جا رہا ہے کہ گرفتار کیے گئے واحد حملہ آور اجمل یا عظیم امیر قصاب کا تعلق پاکستان کے شہر فریدکوٹ سے ہے۔

بھارتی میڈیا میں ان خبروں کے آنے کے بعد سے پاکستانی صحافیوں نے بھی یہ کوششیں شروع کردی تھیں کہ اس بات کا پتا لگایا جائے کہ فرید کوٹ کہاں ہے۔

گزشتہ ہفتے یہ پتہ چلا کہ فرید کوٹ نام کے دو مقامات ملتان ڈویژن میں ہیں۔
ایک فرید کوٹ ملتان سے تقریباً پچاس کلو میٹر کے فاصلے پر ضلع خانیوال کی حدود میں واقع ہے۔ جبکہ دوسرا فرید کوٹ ملتان شہر سے دو سو کلو میٹر دور ہے۔ یہ فرید کوٹ لاہور سے ایک سو کلومیٹر دور اوکاڑہ ضلع کی دیپالپور تحصیل کا حصہ ہے۔ اس گاؤں کی آبادی پندرہ سے بیس ہزار ہے۔

یہاں پہنچنے پر میں نے دیکھا کہ گاؤں کے حالات کچھ غیرمعمولی نوعیت کے ہیں اور بڑی تعداد میں ایسے افراد حرکت میں نظر آ رہے ہیں جن کے بارے میں مقامی افراد کا کہنا تھا کہ وہ خفیہ ایجنسیوں کے اہلکار ہیں۔

جب میں گاؤں کے لوگوں سے پتہ پوچھتا ہوا اس گھر پہنچا جسے امیر قصاب کا گھر بتایا جا رہا تھا تو وہاں موجود سادہ کپڑوں میں ملبوس ’مبینہ اہلکار‘ کیمرہ اور مائیکروفون دیکھتے ہوئے گھر سے باہر نکل آئے۔

قاری محمد نوید اکرم
قاری نوید اکرم سے بھی پوچھا تو انہوں نے بتایا کہ امیر قصاب کے دو بیٹے ہیں جن میں سے ایک کا اپنے والد سے کوئی رابطہ نہیں
میں نے ان لوگوں سے بات کرنے کی کوشش کی تو وہ بنا کچھ کہے دوسری جانب چلے گئے۔ اندر ایک خاتون تھیں جنہوں نے اپنا نام معراج بی بی بتایا۔ وہ صاف طور پر پریشان دکھائی دے رہی تھیں۔

اس گھر میں دو ہی کمرے تھے اور دونوں کمروں کے باہر سے تالا لگا ہوا تھا۔ صرف ایک چارپائی باہر رکھی ہوئی تھی۔

معراج بی بی نے پوچھنے پر بتایا کہ وہ کسی امیر قصاب نامی شخص کو نہیں جانتی۔ انہوں نے بتایا کہ وہ غفور قصاب کی بیوی ہیں اور ان کا کوئی بچہ غائب نہیں ہے۔

جو دوسری بات عجیب لگی وہ یہ کہ پنجاب کے گاؤں میں لوگ کیمرے پر تصویر کھینچوانے سے یا مائیک دیکھ کر نہیں گھبراتے ہیں لیکن یہاں لوگ کچھ گھبرائے ہوئے دِکھائی دے رہے تھے۔ یہاں ایک ایسے صاحب بھی موجود تھے جو صاف طور پر گاؤں کے نہیں دکِھائی دے رہے تھے۔ انہوں نے منع کیا کہ کسی کی تصویر نہ اتاری جائے اور لوگوں کے انٹرویو نہ کئے جائیں۔

میں نے ان سے پوچھا کہ کیا وہ اس گھر میں رہتے ہیں تو انہوں نے کہا کہ نہیں۔ میں نے پوچھا کہ کیا آپ گاؤں میں رہتے ہیں تو انہوں نے کہا کہ ہاں۔ لیکن جب میں نے ان کا نام پوچھا تو وہ جواب دیے بغیر چلے گئے۔

گاؤں کے باہری حصے میں جب ہم نے کچھ لوگوں سے امیر قصاب کا پتہ پوچھا تو لوگوں نے اسی گھر کا پتہ بتایا۔ یہاں تک کہ ہم نے گاؤں کی مرکزی مسجد کے امام قاری نوید اکرم سے بھی پوچھا تو انہوں نے بتایا کہ امیر قصاب کے دو بیٹے ہیں۔ ان میں سے ایک لڑکا جس کا صحیح نام قاری نوید اکرم کو یاد نہیں تھااور وہ اعظم یا اجمل جیسا کوئی نام یاد کرنے کی کوشش کررہے تھے، ان کے بقول مذہبی رجحان والا تھا اور کچھ وقت سے اس کا اپنے والد سے کوئی رابطہ نہیں تھا۔

گاؤں کے لوگوں نے مجھے بتایا کہ کچھ سکیورٹی کے افسر آئے تھے اور وہ وہاں سے فیملی کو لے گئے۔ فرید کوٹ میں اخباروں کے صحافیوں کا تانتا لگا ہوا ہے۔ یہاں کے لوگوں کا کہنا ہے کہ پچھلے ایک ہفتے سے یہاں سرکاری سکیورٹی اہلکاروں کی سرگرمیاں بہت بڑھ گئی ہیں۔

اگرچہ ابھی تک اس بات کے شواہد نہیں ملے کہ ممبئی حملوں میں ملوث امیر عظیم قصاب کا تعلق واقعی اسی گاؤں سے ہے، لیکن یہ بات واضح طور پر دیکھی جا سکتی ہے کہ گاؤں میں سرکاری سکیورٹی ایجنسیوں کے اہلکاروں کی سرگرمیاں معمول سے ہٹ کر ہیں اور یہ کہ انہیں اس گاؤں کے حوالے سے سخت تشویش لاحق ہے۔

 
 
دورۂ پاکستان
ممبئی حملوں کے بعد پاکستان پر امریکی موقف
 
 
ممبئی بھارتی خفیہ ایجنسیاں
پورا نظام تباہی کی طرف جا رہا ہے
 
 
ممبئی ممبئی حملوں کا نتیجہ
ہند پاک سفارتی تعلقات سب سے زیادہ متاثر
 
 
   وزیر داخلہ آر آر پاٹل دھماکے، ماہی گیر
’ریاستی وزیر داخلہ آر آر پاٹل کو آگاہی تھی‘
 
 
ہند - پاک کشیدگی
ممبئی حملوں کے بعد ہند پاک رشتے کشیدہ
 
 
تاج ہوٹل(فائل فوٹو) وڈیو اور تصاویر
ممبئی میں حملے کی تصاویر اور وڈیو جھلکیاں
 
 
اسی بارے میں
ہند- پاک کشیدگی کی طرف
01 December, 2008 | انڈیا
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے   پرِنٹ کریں
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد