’کپواڑہ میں فوج کے کیمپ پر حملہ، تین حملہ آور ہلاک‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اوڑی حملے کے بعد انڈیا نے پاکستان کے زیرِ انتظام علاقے میں شدت پسندوں کے خلاف سرجیکل سٹرائیک کا دعویٰ کیا تھا اور اس کے بعد سے ہی انڈیا اور پاکستان کے درمیان تعلقات کشیدہ ہیں

انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ شدت پسندوں نے علاقے کپواڑہ میں واقع فوج کے ایک کیمپ پر حملے کی کوشش کی ہے اور اس کارروائی کے بعد سرچ آپریشن کے دوران تین شدت پسند ہلاک ہو گئے ہیں۔

انڈیا کے خبر رساں ادارے پی ٹی آئی نے فوج کے ایک افسر کے حوالے سے کہا ہے کہ جمعرات کی 'صبح تقریباً پانچ بجے ہندواڑہ میں واقع فوج کے کیمپ پر فائرنگ ہوئی جس کا فوج کے چوکس جوانوں نے سخت جواب دیا۔'

انھوں نے کہا کہ فائرنگ تقریباً 20 منٹ تک ہوتی رہی اور فوج کے محتاط جوانوں نے حملے کی کوشش کو ناکام بنا دیا ہے۔

سکیورٹی فورسز کے مطابق فائرنگ کرنے والے مسلح شدت پسند وہاں سے فرار ہوگئے تاہم سکیورٹی فورسز نے سرچ آپریشن کے دوران تین مبینہ حملہ آوروں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

جموں کے علاقے اوڑی میں فوج کے کیمپ پر 18 ستمبر کو ہونے والے حملے کے بعد یہ انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں فوج کے کیمپ پر دوسرا حملہ ہے۔

پیر کی صبح بارہمولہ میں بھی فوج کے ایک کیمپ پر حملہ ہوا تھا۔ اس حملے میں بارڈر سکیورٹی فورسز کے ایک نوجوان کی موت ہو گئی تھی اور ایک شدید زخمی ہو گیا تھا۔

اوڑی حملے کے بعد انڈیا نے سرحد پار جا کر شدت پسندوں کے خلاف سرجیکل سٹرائیک کا دعوی کیا تھا اور اس کے بعد سے ہی انڈیا اور پاکستان کے درمیان تعلقات کشیدہ ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں