فضائي آلودگی کے باعث دہلی کے تمام سکول بند، مصنوعی بارش پر غور

دہلی مظاہرہ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گذشتہ روز سکولی طلبہ اور ان کے والدین نے دہلی میں آلودگی کے خلاف مظاہرہ کیا

انڈیا کے دارالحکومت دہلی میں آلودگی میں خطرناک حد تک اضافے کے بعد ریاست کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے سرکاری طور پر چند اقدامات کا اعلان کیا ہے۔

انھوں نے آئندہ تین دنوں کے لیے دہلی کے تمام سکول کو بند رکھنے کا حکم جاری کیا ہے اس کے علاوہ مصنوعی بارش پر بھی غور کیا جا رہا ہے۔

سموگ سے دہلی میں 1700 سے زیادہ سرکاری سکول بند

دہلی میں سموگ: آنکھوں میں جلن، سینے میں طوفان کا انتظار

دہلی میں گذشتہ ایک ہفتے سے حالات ناگفتہ بہ ہیں۔ فضائی آلودگی میں اس قدر اضافہ ہو چکا ہے کہ آنکھیں جلنے لگی ہیں اور گلے میں چبھن کا احساس ہوتا ہے۔

ایسی صورت حال سے نمٹنے کے لیے ریاستی حکومت نے دس نکاتی پروگرام کا اعلان کیا ہے۔ ریاست کے وزیر اعلی نے لوگوں کو گھروں سے باہر نہ نکلنے کی ہدایت کی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption آلودگی کے سبب ہر وقت ایک کہر کی چادر دہلی پر تنی نظر آتی ہے

1. اگلے تین دنوں تک دہلی کے سارے سکول (سرکاری اور پرائیویٹ) بند رہیں گے۔

2. دس دنوں کے لیے دہلی کے جنوب میں واقع بدرپور پاور پلانٹ کو بھی بند رکھنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

3. کوئلے پر مبنی بدرپور پاور پلانٹ سے راکھ اٹھانے پر بھی روک لگائی گئی ہے۔

4. دہلی میں پانچ دنوں تک تمام طرح کے تعمیری کام بند رہیں گے۔

5. سوموار سے دہلی کی سڑکوں پر پانی کے چھڑکاؤ کیے جائيں گے۔

6. دس دنوں تک دہلی میں جنریٹر چلانے پر پابندی رہے گی۔

7. ایک بار پھر ایک دن طاق اور ایک دن جفت نمبر کی گاڑیوں کے نظام کو عمل میں لانے کی تیاری کی جا رہی ہے۔

8. دہلی میں کوڑے جلانے پر فی الحال مکمل پابندی لگا دی گئی ہے۔

9. دس نومبر سے سڑکوں کو ویکیوم کے ذریعے صاف کیے جانے کا عمل شروع ہوگا۔

10. مصنوعی بارش پر بھی غور کیا جا رہا ہے۔

کجیریوال نے کہا کہ ہمیں یہ اندازہ نہیں تھا کہ آلودگی کی سطح اس خطرناک حد تک بڑھ جائے گی۔ ہم فصلوں کے پیال جلانے کو ہی اس کا واحد سبب قرار نہیں دیتے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں