ہم جنس پرستی اور انڈیا کا قانون
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

انڈیا کی سپریم کورٹ نے ہم جنس پرستی کے قانون پر از سرِ نو غور کرنے کا فیصلہ کیا ہے

انڈیا میں ہم جنس پرستی قابلِ تعزیر جرم ہے لیکن سنہ دو ہزار نو میں دلی ہائي کورٹ نے برطانوی عہد کے اِس قانون کو انڈين آئین میں دیے جانے والے بنیادی حقوق کے منافی قرار دیا تھا۔ اِس کے بعد سنہ دو ہزار تيرہ میں سپریم کورٹ نے تعزیراتِ ہند کی دفعہ تين سو ستتر کے تحت دلی ہائي کورٹ کے فیصلے کو بدلتے ہوئے اسے جرائم کی فہرست میں برقرار رکھا تھا۔ ہم جنس پرستی کو جرائم کی فہرست سے نکالنے کے لیے سنہ دو ہزار پندرہ میں ایک بل پیش کیا گیا جسے شکست کا سامنا رہا۔ رواں سال کے اوائل میں سپریم کورٹ نے اِس پر از سرِ نو غور کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ نائی کی دکان سے چائے کی دکان سیریز کی آخری پیشکش میں لکھنؤ سے مرزا عبدالباقی