انڈیا: شادی سے انکار، خاتون نے عاشق پر تیزاب پھینک دیا

ملزمہ تصویر کے کاپی رائٹ KASHIF MASHOOD
Image caption خاتون پیشے سے نرس بتائی جاتی ہیں

انڈیا کے جنوبی شہر بنگلور میں شادی سے انکار کرنے پر ایک خاتون نے اپنے عاشق پر تیزاب پھینک دیا ہے اور پولیس کا کہنا ہے کہ یہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ ہے۔

خاتون پیشے سے نرس بتائی جاتی ہیں اور ان پر الزام ہے کہ انھوں نے 32 سالہ جے کمار پروشوتم کے چہرے پر تیزاب پھینکا ہے اور ہسپتال میں ان کے چہرے پر چاقو سے وار کرنے کے بھی الزامات ہیں۔

نئے سال پر جنسی حملے، بنگلور میں چھ گرفتار

’ایسی چیزیں ہو جاتی ہیں‘، وزیر کے بیان پر ہنگامہ

پروشوتم کی جانب سے پولیس میں درج شکایت کے مطابق لیدیا یشپال نامی نرس سے ان کا اچھا رشتہ تھا اور لیديا ان سے شادی کرنا چاہتی تھیں۔ لیکن وہ شادی سے اس لیے انکار کر رہے تھے کہ دونوں کے مذاہب مختلف تھے اور اسی سبب ان کے والدین اس شادی کو قبول نہیں کر رہے ہیں۔

پولیس کے پاس درج شکایت کے مطابق پروشوتم نے لیديا سے گذشتہ تین ماہ سے دوری قائم کر رکھی تھی اور لیديا یہ جان کر شدید غصے میں تھیں کہ پروشوتم شادی کے لیے دوسری لڑکی تلاش کر رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پولیس کے ایک اعلی اہلکار کے مطابق کسی خاتون کا کسی مرد پر تیزاب سے حملہ ان کی یادداشت میں رونما نہیں ہوا

بنگلور کے پولیس ڈپٹی کمشنر (مغرب) ایم این انوچھیت نے بی بی سی کو بتایا: ’میں نے ایسا معاملہ پہلی بار دیکھا ہے۔ گذشتہ 12 سال کے ریکارڈ میں کسی خاتون کا مرد پر تیزاب سے حملے کا کوئی واقعہ نہیں ہوا۔ میں دوسرے محکموں کی بات نہیں کر سکتا۔‘

بنگلور (مغرب) پولیس کے ایک سینیئر افسر کا کہنا ہے کہ ’شہر میں اس طرح کا یہ پہلا واقعہ ہے۔ مجھے یاد نہیں کہ کسی خاتون نے کسی مرد پر تیزاب سے حملہ کیا ہو۔‘

پولیس کو ابھی لیديا کی عدالتی حراست کا پروانہ نہیں ملا ہے۔ لیديا یشپال کو بدھ کو عدالت میں حاضر ہونا ہے۔

بنگلور میں خواتین کو ہراساں کرنے کے واقعات میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے اور نئے سال میں بڑے پیمانے پر میڈیا میں ایسی خبریں آتی رہی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں