'ماں کے لیے 20 سال سے مردوں کے کپڑے نہیں پہنے'

چینی شخص

،تصویر کا ذریعہPEAR VIDEO

،تصویر کا کیپشن

پیئر ویڈیو کے مطابق ان کا یہ ویڈیو 40 لاکھ سے زیادہ مرتبہ دیکھا جا چکا ہے

چین میں ایک 50 سالہ شخص کا ویڈیو وائرل ہو رہا ہے جس میں یہ گذشتہ 20 سالوں سے خاتون بن کر زندگی بسر کر رہا ہے۔

اس شخص کا کہنا ہے کہ بہن کی موت کے بعد اس نے اپنا یہ روپ بنا رکھا اور اس نے اپنی ماں کی بگڑتی ذہنی حالت کو بہتر بنانے کے لیے یہ قدم اٹھایا۔

پیئر ویڈیوز نام کی کمپنی کے اس ویڈیو کو سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ويبو پر 42 لاکھ سے زیادہ مرتبہ دیکھا جا چکا ہے جبکہ اسے دوسرے نیوز پلیٹ فامز پر بھی خوب شیئر کیا جا رہا ہے۔

ویڈیو میں گوانگشي علاقے کے گوئلن میں رہنے والا یہ شخص اپنی بوڑھی ماں کے سامنے چینی خواتین کے روایتی لباس میں نظر آ رہا ہے۔

سوشل نیٹ ورک کی ویب سائٹ ويبو پر HePosedAsHisDeadSisterFor20Years#ہیش ٹیگ کے ساتھ ہزاروں کی تعداد میں لوگ اس ویڈیو کو شيئر کر رہے ہیں ہے۔

ایک صارف نے تبصرہ کرتے ہوئے لکھا: 'ایک آدمی جو اپنی ماں کی خوشی کے لیے 20 سال سے لڑکی بن کر رہا ہے، ہمیں اس کی تعریف کرنی چاہیے۔'

ایک اور تبصرے میں کہا گیا ہے کہ 'یہ آدمی عورت کے طور پر خوبصورت نظر آ رہا ہے۔'

دوسری طرف کچھ لوگ یہ شبہ بھی ظاہر کر رہے ہیں کہ کہیں یہ آدمی اپنی جنسیت کو چھپانے کے لیے ماں کے دکھ کا سہارا تو نہیں لے رہا۔

20 سال سے مردوں کے کپڑے نہیں پہنے

،تصویر کا ذریعہPEAR VIDEO

،تصویر کا کیپشن

چینی شخص کا کہنا ہے کہ انھوں نے 20 سال سے مردوں کے کپڑنے نہیں پہنے

پیئر ویڈیوز سے بات کرتے ہوئے اس شخص نے بتایا کہ 20 سال پہلے جب ان کی بہن کی موت ہوئی تو ماں کی خراب ہوتی ذہنی حالت کو دیکھتے ہوئے انھوں نے اپنی بہن کے کپڑے پہن کر ماں کے سامنے آنے کا فیصلہ کیا تھا۔

اپنی بہن کے لباس میں دیکھ کر ان کی ماں کو یہ محسوس ہوا کہ ان کی بیٹی واپس آئی ہے۔ ماں کے چہرے پر دوبارہ خوشی دیکھنے کے بعد اس نے ہمیشہ عورت کے طور پر رہنے کا ہی فیصلہ کر لیا۔

وہ بتاتے ہیں کہ اس کے بعد انھوں نے کبھی مردوں کے کپڑے پہنے ہی نہیں، لوگ ان کے بارے میں کیا سوچتے ہیں انھیں اس بات سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔