کابل میں ملٹری اکیڈمی کی بس پر خودکش حملہ، 15 کیڈٹس ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

افغانستان کی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ دارالحکومت کابل میں ملٹری اکیڈمی کی بس پر خود کش حملے میں کم از کم 15 کیڈٹس ہلاک ہوئے ہیں۔

وزارت دفاع کے ترجمان دولت وزیری نے کہا کہ مقامی وقت کے مطابق دوپہر کے ساڑھے تین بجے ایک خود کش حملہ آور نے مارشل فہیم ملٹری اکیڈمی کی بس کو نشانہ بنایا۔

’دولتِ اسلامیہ افغانستان میں کیسے مضبوط ہوئی‘

افغانستان: دو مساجد پر حملوں میں 60 افراد ہلاک

انھوں نے مزید کہا کہ اس بس میں وہ کیڈٹس سوار تھے جو ملٹری اکیڈمی میں کم دورانیے کے کورسز میں زیر تربیت ہیں۔

دولت وزیری نے برطانوی خبر رساں ایجنسی روئٹرز کو بتایا کہ خودکش حملہ آور نے ملٹری اکیڈمی کی بس کو نشانہ بنایا جب یہ بس مارشل فہیم ملٹری اکیڈمی سے نکل رہی تھی۔ 'اس خود کش حملے کے نتیجے میں ملٹری اکیڈمی میں زیر تربیت 15 کیڈٹس ہلاک جبکہ چار زخمی ہوئے ہیں۔' اطلاعات کے مطابق خود کش حملہ آوور پیدل تھا۔

یاد رہے کہ گذشتہ روز ہی افغانستان میں دو مساجد پر دو مختلف حملوں میں کم از کم 60 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوئے تھے۔

دارالحکومت کابل کے مغربی حصے میں واقع امامِ زمانہ مسجد پر ہونے والے خود کش حملے میں کم از کم 39 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ اس کے علاوہ افعانستان کے مرکزی صوبے غور میں ایک اور مسجد پر ہونے والے حملے میں 20 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں