ممبئی کے ایک گھر کی چھت پر تیار ہونے والا طیارہ

انڈیا

،تصویر کا ذریعہAFP

،تصویر کا کیپشن

انڈیا کے پائلٹ کیپٹن امول یادو حیدر آباد میں اپنے بنائے ہوئے جہاز ٹی اے سی 003 کے ساتھ 16 مارچ سنہ 2016 کو ہونے والے ایئر شو کے ساتھ کھڑے ہیں۔ ایم یادو جیٹ ایئر ویز کے ساتھ بطور پائلٹ کام کرتے ہیں۔ انھوں نے ممبئی میں واقع اپنے گھر کی چھت پر اس جہاز کو تیار کیا ہے۔

انڈیا

،تصویر کا ذریعہCourtesy: Amol Yadav

،تصویر کا کیپشن

امول یادو کی پانچ منزلہ عمارت جہاں ان کے خاندان کے 19 افراد رہتے ہیں کے گھر میں کوئی لفٹ نہیں تھی، لہذا انھوں نے فیکٹری لیتھوں، کمپریسروں، ویلڈنگ مشینیں کے ساتھ ایک 180 کلو گرام وزنی انجن کو درآمد کیا اور اپنے گھر کی چھت پر ایک انجن والے جہاز کو بنانا شروع کیا۔

،تصویر کا ذریعہCourtesy: Amol Yadav

،تصویر کا کیپشن

امول یادو نے آخر کار گذشتہ سال فروری میں چھ نشستوں پر مشتمل پروپیلر جہاز تیار کر لیا جو ان کے مطابق انڈیا کے گھر کی چھت پر بنایا جانے والا پہلا جہاز تھا۔ اس جہاز کو ایک کار کے ذریعے مہاراشٹر کے ایک ہوائی اڈے پر ٹیسٹنگ کے لیے لایا گیا۔

،تصویر کا ذریعہCourtesy: Amol Yadav

،تصویر کا کیپشن

اس جہاز کو ٹکڑے ٹکڑے کر کے ایک کرین کی مدد سے چھت سے اتارا گیا۔

،تصویر کا ذریعہAnushree Fadnavis/Indus Images

،تصویر کا کیپشن

یہ جہاز اب ممبئی کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر کھڑا ہے۔

،تصویر کا ذریعہAnsuhree Fadnavis/Indus Images

،تصویر کا کیپشن

امول یادو اپنے گھر کی چھت پر موجود ہیں جہاں وہ اپنے نئے پروٹو ٹائپ جہاز جو کہ 19 نشستوں پر مشتمل ہو گا پر کام کر رہے ہیں۔

یہ تصاویر انوشری فڈویس اور مول یادو کے خاندان نے مہیا کی ہیں۔