جاسوسی کا شبہ: خاتون کو دستاویزات واٹس ایپ کرنے پر انڈین گروپ کیپٹن گرفتار

انڈین ایئر فورس

انڈیا کی سرکاری خبر رساں ایجنسی پریس ٹرسٹ آف انڈیا کے مطابق انڈین ایئر فورس کے ہیڈ کوارٹر میں تعینات ایک گروپ کیپٹن کو جاسوسی کرنے کے شبہے میں گرفتار کیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق ان پرالزام ہے کہ وہ ممکنہ طور پر حساس دستاویزات تک رسائی حاصل کرنے کی کوشش کررہے تھے۔

پریس ٹرسٹ آف انڈیا (پی ٹی آئی) کے مطابق تفتیش کار اس بات کا جائزہ لے رہے ہیں آیا انہیں جھانسہ دے کر یہ دستاویزات تو حاصل نہیں کی جارہی تھیں۔

یہ بھی پڑھیے

کلبھوشن سے پہلے کتنے جاسوس

انڈیا: ’جاسوس کبوتر جانباز خان‘ فرار ہونے میں کامیاب

بتایا گیا ہے کہ وہ ان دستاویزات کی تصاویر کسی خاتون کو واٹس ایپ پر بھجوا رہے تھے۔

ذرائع کے مطابق اس بات کا بھی جائزہ لیا جا رہا ہے کہ وہ جاسوسی کے کسی بڑے گروہ کا حصہ تو نہیں ہیں۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ ’یہ آفیسر یقیناً ایک ممنوعہ برقی آلے کے ساتھ ان چاہی سرگرمی میں ملوث پائے گئے ہیں جس کی اجازت نہیں تھی۔‘

بظاہر وہ اس خاتون سے سوشل میڈیا کے ذریعے متعارف ہوئے۔

پریس ٹرسٹ آف انڈیا نے سرکاری ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ انڈین ایئر فورس کی مرکزی سکیورٹی اور تحقیقات سے متعلق ٹیم نے اس آفیسر کو حراست میں لے لیا ہے اور ان سے پوچھ گچھ جاری ہے۔

ذرائع کے مطابق مشکوک سرگرمیوں کا علم اس وقت ہوا جب انٹیلیجنس کی نگرانی کے دوران اس اہلکار کے پاس حسّاس دستاویزات پائی گئیں۔

انڈین ایئر فورس نے اس معاملے میں کوئی تبصرہ نہیں کیا۔

اس آفیسر کی شناخت بھی خفیہ رکھی گئی ہے۔ اور تفتیش کار معلوم کر رہے ہیں کہ آیا اس اہلکار نے یہ معلومات آگے منتقل تو نہںی کر دیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں