ایران: مسافر طیارہ گر کر تباہ، ’تمام 66 افراد ہلاک‘

ATR 72-500 تصویر کے کاپی رائٹ Konstantin von Wedelstaedt

ایران میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک مسافر بردار جہاز پہاڑوں میں گر کر تباہ ہو گیا ہے اور جہاز میں سوار مسافر اور عملے سمیت سوار تمام 66 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق آسمان ایئر لائن کا مسافر برادر طیارہ تہران سے جنوب مغربی شہر یسوج جا رہا تھا، جو اصفہان کے قریب گر کر تباہ ہوا۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق مسافر طیارہ وسطی ایران میں پہاڑی علاقے میں گر کر تباہ ہوا۔

ایران بوئنگ کمپنی سے 80 مسافر طیارے خریدے گا

کمرشل ایئر لائنز کے لیے محفوظ ترین سال

امدادی ادارے ہلالِ احمر کا کہنا ہے کہ جائے وقوعہ پر ریسکیو اور سرچ کی ٹیمیں روانہ کر دی گئی ہیں۔

جہاز مقامی وقت کے مطابق تہران سے صبح آٹھ بجے روانہ ہوا تھا اور پرواز کے ایک گھنٹے کے بعد وہ ریڈار سے غائب ہو گیا۔

ایرانی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ جہاز یسوج سے 22 کلو میٹر کے فاصلے پر ڈینا پہاڑ پر گر کر تباہ ہو گیا۔

آسمان ایئرلائن کا مسافر جہاز فرانسیسی ساختہ اے ٹی آر 72-500 جہاز تھا۔ جہاز میں سوار 60 مسافروں کے علاوہ دو سکیورٹی، پائلٹ اور عملے کے تین افراد سوار تھے۔

ایئر لائن کے ترجمان محمد تباتبانی کا کہنا ہے کہ ’علاقے میں تلاش کے بعد ہمیں مطلع کیا گیا کہ جہاز تباہ ہو گیا ہے اور بد قسمتی سے تمام افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

ہلاک ہونے والوں میں ایک بچہ بھی شامل ہے۔

ایمرجنسی سروس کے سربراہ پیر حسین نے کہا کہ موسم کی خرابی کی وجہ سے ریسکیو آپریشن میں مشکلات کا سامنا ہے اور ایمرجنسی ٹیموں جائے وقوعہ پر ہیلی کاپٹر کے بجائے زمینی راستے سے پہنچ رہی ہیں۔

عمر رسیدہ طیارے

حالیہ کچھ عرصے میں ایران میں ہوائی حادثات میں اضافہ ہوا ہے۔

ایران کے جوہری پروگرام کے سبب اُس پر عائد پابندیوں کی وجہ سے ایران کو جہازوں کی مرمت میں مشکلات کا سامنا رہا ہے۔

گو کہ اب 2015 میں ایران اور عالمی برداری کے درمیان معاہدے کے بعد پابندیاں تو ختم ہوئی ہیں۔

آسمان ایئر کا شمار ایران کی تیسری بڑی ایئر لائن میں ہوتا ہے۔ ایئر لائن نے گذشتہ سال بوئنگ سے 30 نئے 737 طیارے خریدنے کا معاہدے کیا تھا۔

گذشتہ پانچ سالوں میں ہونے والے فضائی حادثوں کی فہرست

2013

16 اکتوبر: جنوب مشرقی ایشیائی ملک لاؤس کا مسافر طیارہ لینڈنگ کرتے ہوئے دریائے میکونگ میں گر گیا جس کے نتیجے میں طیارے میں دس ممالک سے تعلق رکھنے والے 49 افراد ہلاک ہو گئے۔

17 نومبر: ٹاٹارسٹان ائیر لائنز کا بوئنگ 737 طیارہ روس کے شہر کازان میں اترتے وقت تباہ ہو گیا جس کی وجہ سے تمام 50 مسافر ہلاک ہو گئے۔

2014

11 فروری: الجیریا کا فوجی طیارہ ہرکولیس سی 130 78 افراد کو لے کر جا رہا تھا جب وہ ملک کے پہاڑی شمال مشرقی حصے میں تباہ ہو گیا جس میں ایک کے سوا باقی تمام مسافر ہلاک ہو گئے۔

8 مارچ: ملائیشیا ائیر لائنز کا مسافر طیارہ ایم ایچ 370 ملک کے دارالحکومت کوالالمپور سے چین جا رہا تھا جب وہ ریڈار سے غائب ہو گیا جس کے بعد فضائی تاریخ کا سب سے بڑا ریسکیو آپریشن شروع کیا گیا۔ جولائی 2015 میں پہلی دفعہ طیارے کے پر کا ایک حصہ ملا تھا۔

17 جولائی: اسی سال ملائیشیا ائیر لائنز کا ایک اور مسافر طیارہ ایم ایچ 17 یوکرین کے نزدیک گر کر تباہ ہو گیا جس کے نتیجے میں تمام 298 مسافر ہلاک ہو گئے جن میں سے 193 کا تعلق ہالینڈ سے تھا۔ خیال کیا جاتا ہے کہ روس کی جانب جھکاؤ رکھنے والے باغیوں نے زمین سے ہوا میں مار کرنے والے میزائل سے طیارے کو مار گرایا لیکن وہ اس الزام کی تردید کرتے ہیں۔

23 جولائی: تائیوان کے مسافر طیارے میں سوار 58 میں سے 48 افراد ہلاک ہو گئے جب جہاز لینڈ کرتے ہوئے تباہ ہو گیا۔

24 جولائی: ائیر الجئیر کا طیارہ اے ایچ 5017 افریقی ملک مالی اور برکینا فاسو کے پاس سے گزر رہا تھا جب خراب موسم کے باعث ہو ریڈار سے غائب ہو گیا اور دوبارہ اس سے تعلق قائم نہ ہو سکا۔ جہاز میں سوار تمام 116 افراد اس کے نتیجے میں ہلاک ہو گئے۔

28 دسمبر: ائیر ایشیا کا طیارہ کیو زی 8501 انڈونیشیا سے سنگاپور جا رہا تھا جب وہ بحر جاوا ے پاس سے غائب ہو گیا۔ تمام 162 مسافر اس حادثے میں ہلاک ہو گئے۔

2015

24 مارچ: جرمن ونگز نامی کمپنی کا ائیر بس طیارہ بارسلونا سے ڈسلڈروف جاتے ہوئے تباہ ہو گیا جس کے نتیجے میں سوار تمام 148 افراد ہلاک ہو گئے۔

30 جون: انڈونیشیا کا فوجی طیارہ ہرکولیس سی 130 میدان شہر میں گر گر تباہ ہو گیا جس کی وجہ سے طیارہ میں سوار تمام 122 افراد جبکہ زمین پر موجود 19 افراد بھی ہلاک ہو گئے۔

31 اکتوبر: روس سے تعلق رکھنے والی فضائی کمپنی کا طیارہ اردن کے شہر شرم الشیخ سے اڑ کر اپنی منزل کی طرف جا رہا تھا جب پرواز پکڑنے کے 22 منٹ بعد وہ سینائی کے پاس گر گیا۔ حادثے میں تمام 224 افراد ہلاک ہو گئے۔

2016

19 مارچ: فلائی دبئی کا طیارہ روس کے شہر راسٹو آن ڈان میں گر گیا جس کے نتیجے میں تمام 62 افراد ہلاک ہو گئے۔

19 مئی: مصر کی قومی ائیر لائنز ایجپٹ ائیر کے طیارہ پیرس سے قاہرہ جا رہا تھا جب وہ گر گر تباہ ہو گیا۔ اس حادثے میں تمام 66 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

28 نومبر: برازیل کے فٹبال کلب شاپاکوئینزے کی ٹیم کولمبیا کے شہر میڈلین سے اڑنے والی پرواز میں تھی جو کہ ایندھن ختم ہونے کے باعث گر گیا اور طیارے میں سوار 71 افراد ہلاک ہو گئے جبکہ چھ افراد بچ گئے۔

7 دسمبر: پاکستان کی قومی ائیر لائنز کا طیارہ ملک کے شمالی علاقے میں گر کر تباہ ہو گیا جس کے نیتجے میں تمام 48 افراد ہلاک ہو گئے۔ پی آئی اے نے اس حادثے کے بعد کہا کہ چترال سے اسلام آباد جانے والی پرواز میں کوئی تکنیکی خرابی نہیں تھی۔

25 دسمبر: روسی فوج کا طیارہ بحر اسود کے پاس گر گیا اور اس حادثے میں تمام 92 افراد ہلاک ہو گئے۔

2017

سال 2017 فضائی تاریخ کا سب سے بہترین اور محفوظ سال تصور کیا جاتا ہے جس میں ایک بھی فضائی حادثہ رونما نہیں ہوا۔

2018

11 فروری: ماسکو کے ڈوموڈےڈو ائیر پورت سے اڑنے والا روسی مسافر طیارہ پرواز کے چند منٹوں بعد گر گیا جس کے نتیجے میں جہاز میں سوار تمام 71 افراد ہلاک ہو گئے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں