چین: صدر شی جن پنگ کو تیسری مرتبہ صدر بنانے کی ’کوشش‘

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

چین کی حکمراں جماعت کمیونسٹ پارٹی نے آئین میں اس شق کو ختم کرنے کی تجویز دی ہے جس کے تحت ایک شخص مسلسل دو بار ہی پانچ پانچ برس کی مدت کے لیے صدر منتخب ہو سکتا ہے۔

اس تجویز کی منظوری کی صورت میں صدر شی جن پنگ اپنے صدارتت اقتدار کے دو ادوار کے بعد بھی صدر رہ سکیں گے۔ ان کی صدارت کی پہلی مدت رواں برس ختم ہونے والی ہے۔

موجودہ نظام کے تحت صدر شی جن پنگ کی مدت صدارت 2023 کو ختم ہونا ہے۔

چین میں بڑی شدت سے قیاس آرائیاں کی جا رہی تھیں کہ صدر شی جن پنگ اپنی صدارت کو 2023 کے بعد بھی توسیع دینا چاہتے ہیں۔

صدر شی جن پنگ کے بارے میں مزید پڑھیے

چینی قیادت کیسے منتخب ہوتی ہے

شی جن پنگ، غار سے ایوانِ صدر تک

چین کے صدر شی جن پنگ نے جانشین کا اعلان نہیں کیا

صدر شی جن پنگ چیئرمین ماؤ کی صف میں شامل

حکمراں جماعت کی گذشتہ برس منعقد ہونے والی کانگریس کے دوران صدر شی جن پنگ کو ماؤ زے تنگ کے بعد ملک کے سب سے طاقتور رہنما کے طور پر دیکھا گیا تھا۔

کمیونسٹ پارٹی کے اجلاس میں ان کی پالیسیوں کو 'شی جن پنگ کے خیالات' کے عنوان کے ساتھ پارٹی کے چارٹر میں شامل کیا گیا تھا اور روایت کے برعکس اجلاس کے اختتام پر صدر شی جن پنگ کے جانشین کا اعلان نہیں کیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ بند دروازے میں ہونے والا یہ سربراہی اجلاس ہر پانچ سال بعد منعقد ہوتا ہے جو اس بات کا تعین کرتا ہے کہ کمیونسٹ پارٹی کا اگلا حکمران کون ہو گا۔

1953 میں پیدا ہونے والے صدر شی جن پنگ نے 1974 میں کمیونسٹ پارٹی میں شمولیت اختیار کی تھی اور پارٹی میں ترقی کرتے ہوئے 2013 میں اس کے صدر بن گئے تھے۔ صدر شی کے والد کو کمیونسٹ انقلاب کا ہیرو سمجھا جاتا ہے۔

صدر شی جن پنگ نے صدر بننے کے بعد اقتصادی اصلاحات متعارف کرائیں اور انسداد رشوت ستانی کی سخت ترین مہم شروع کی اور حقوق انسانی کے کارکنوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا۔ ان پر اس مہم کو مخالفین کو راستے سے ہٹانے کے لیے استعمال کیے جانے کے الزام کا سامنا بھی رہا ہے۔

کمیونسٹ پارٹی کی سینٹرل کمیٹی نے تجویز دی ہے کہ ملک کے آئین میں اس تاثر کو ختم کر دینا چاہیے جس کے تحت عوامی جمہوریہ چین کے صدر اور نائب صدر مسلسل تیسری بار صدر کے عہدے کے لیے منتخب نہیں ہو سکتے۔

سینٹرل کمیٹی نے اس کے علاوہ مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں تاہم مکمل تجویز کو بعد میں جاری کیا جائے گا۔

چین کے سیاسی نظام کے بارے میں پڑھیے

چینی قیادت کیسے منتخب ہوتی ہے

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption گذشتہ برس کے کانگریس اجلاس کے اعلان میں صدر شی جن پنگ کے جانشین کا نام شامل نہیں ہے جو کہ روایتی طور پر شامل ہوتا ہے

سینٹرل کمیٹی کی جانب سے اعلان کے وقت کا انتخاب اہمیت کا حامل ہے کیونکہ چین کے نئے قمری سال پر ہونے والی قومی تعطیلات کے بعد پیر کو لوگ چھٹیوں سے واپس کام پر آئیں گے جبکہ جنوبی کوریا میں سرمائی اولمپکس کے اختتام کے بعد 2022 کے اولمپکس کی مشعل چین کے حوالے کرنے کی تیاری کی جا رہی ہے۔

سینٹرل کمیٹی میں حکمراں جماعت کے اعلیٰ حکام شامل ہوتے ہیں اور ان کا پیر کو بیجنگ میں اجلاس منعقد ہو رہا ہے۔

مدت صدارت کے حوالے سے تجویز قانون سازوں کے سامنے پانچ مارچ کو شروع ہونے والے نیشنل کانگریس کے اجلاس میں پیش کی جائے گی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں